ہم ریاست میں جلد انتخابات اور صدر راج کے خاتمے کے حق میں،عوامی حکومت بنانا جمہوری صحت کیلئے بہت بہتر۔ ریاستی گورنر ستیہ پال ملک

0 74

 

سرینگر/ ریاستی گورنر ستیہ پال ملک نے کہا کہ ریاست جموںو کشمیر میں جتنی جلدی عوامی حکومت بن جائے گی جمہوری صحت کیلئے اُتنا ہی اچھا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ انتظامیہ عوامی منتخب حکومت کے حق میں ہیں تاہم ریاست میں انتخابات کرانے کا فیصلہ الیکشن کمیشن کو ہی لینا ہے ۔ کرنٹ نیوز آف انڈیا کے مطابق ریاستی گورنر ستیہ پال ملک نے آج سرینگر میں ایک تقریب کے حاشیہ پر نامہ نگاروں کے ساتھ بات کرتے ہوئے کہا کہ ریاست جموںو کشمیر میں جتنی جلدی عوامی حکومت بن جائے گی اتنا ہی جمہوری صحت کیلئے اچھا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ریاست جموں و کشمیر میںعوامی منتخب حکومت سے کئی عوامی مسائل حل ہوں گے کیوں کہ لوگ اپنے چندہ نمائندوں کو چن کر ایوان میں بھیج دیتے ہیں جو عوامی مسائل کی طرف سرکارکی توجہ مبذول کراتے ہیں ۔ انہوںنے کہا کہ ہم اپنی خدمات انجام دیتے رہیں گے ۔ جموں کشمیر کے گورنر ستیہ پال ملک نے بدھ کو کہا کہ اْن کی انتظامیہ ریاست کے اندر جاری صدر راج کے فوری خاتمے کے حق میں ہے لیکن ریاستی اسمبلی کے انتخابات کے انعقاد سے متعلق فیصلہ الیکشن کمیشن آف انڈیا کو ہی لینا ہے۔جب اْن سے پوچھا گیا کہ اْن کی انتظامیہ منتخب حکومت کو اقتدار سونپنے کے حق میں نہیں ہے تو اْنہوں نے صاف انکار کیا۔گورنر ملک نے سرینگر میں ایک تقریب کے حاشیئے پر نامہ نگاروں کو بتایا”ہم صدر راج کا جلد خاتمہ چاہتے ہیں لیکن اسمبلی انتخابات کے انعقاد کا فیصلہ الیکشن کمیشن آف انڈیا کو ہی لینا ہے”۔ واضح رہے کہ مرکزی وزیر داخلہ راجناتھ سنگھ نے بھی حال ہی میں ایک بیان میں کہا تھا کہ جموں کشمیر میں اسمبلی انتخابات کے انعقاد کا فیصلہ الیکشن کمیشن کو ہی لینا ہے تاہم اْنہوں نے اشارہ دیاتھا کہ اس ضمن میں لوک سبھا انتخابات کے بعد کوئی حتمی فیصلہ لیا جائے گا۔جموں کشمیر پر19جون2018کوگورنر راج نافذ کیا گیا جب پی ڈی پی۔ بھاجپا اتحاد ٹوٹ گیا۔اس کے بعد ریاست کو براہ راست صدر راج کے تحت لایا گیا جو کہ ایک آئینی مجبوری ہوتی ہے۔یاد رہے کہ گذشتہ برس بھارتیہ جنتا پارٹی نے پی ڈی پی کے ساتھ اتحاد توڑ کر سرکار میں اپنی حمایت واپس لی جس کے بعد اگرچہ کئی مقامی سیاسی جماعتوں نے حکومت سازی کیلئے پر تولے تاہم وہ اس میںکامیاب نہیں ہوئے کیوں کہ کوئی جماعت حکومت سازی کیلئے درکار ارکان ہونے کا دعویٰ کرتے گورنرنے ریاست میں اسمبلی تحلیل کرنے کا اعلان کیا تھا۔ ( سی این آئی )

تبصرے
Loading...