کشمیر کی ایم بی بی ایس طالبہ کی بنگلہ دیش میں پُر اسرار طور پر موت

نعش کو وطن لانے کیلئے لواحقین ، عمر عبداللہ اورمحبوبہ مفتی نے سشما سوراج سے اپیل کی

0 138

سرینگر: بنگلہ دیش میں ایم بی بی ایس کررہی ایک کشمیری لڑکی اپنے ہوسٹل میں پُر اسرار طور پر مردہ پائی گئی لڑکی کا تعلق ضلع اننت ناگ سے تھا اور اس کے لواحقین نے مرکزی وزارت خارجہ کو اپنی لڑکی کی نعش حاصل کرنے کیلئے اقدامات حاصل کرنے کی اپیل کی ہے جبکہ انہوں نے معاملے کی جانچ کرانے کا بھی مطالبہ کیا ہے ۔ اس دوران سابقہ ریاستی وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی نے وزیر خارجہ سشما سوراج سے اس ضمن میں اقدامات اُٹھانے کی اپیل کی ہے ۔جبکہ نیشنل کانفرنس کے صدر عمر عبداللہ نے بھی ٹویٹ کرتے ہوئے مرکزی وزیر خارجہ سے اس معاملے میں کارروائی کرنے کا مطالبہ کیا ہے ۔ کرنٹ نیوز آف انڈیا کے مطابق جنوبی کشمیر کے اننت ناگ کی رہنے ولی قرۃ العین طاہر النساء میڈیکل کالیج، غازی پور بنگلہ دیش میں ایم بی بی ایس کی ڈگری حاصل کررہی تھی جہاں وہ پُر اسرار طور پر اپنے ہوسٹل کمرے میں مردہ پائی گئی۔ ذرائع نے بتایا کہ مذکورہ لڑکی اپنے ہوسٹل میں بے ہوشی کی حالت میں پائی گئی اور لڑکی کو اگرچہ اپنی ساتھی طالبات نے ہسپتال پہنچایا تاہم وہ مرچکی تھی۔ مذکورہ ایم بی بی ایس طالبہ کے لواحقین نے اس کی نعش کو حاصل کرنے کیلئے وزارت خارجہ سے اپیل کی ہے انہوںنے اپیل میںکہا ہے کہ لڑکی کی آخری رسومات اداکرنے کیلئے نعش کو اپنے آبائی علاقہ پہنچانے میں وزارت اپنا رول اداکریں ۔ اس دوران پی ڈی پی صدر اور سابقہ وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی نے وزیر خارجہ سشما سوراج سے اپیل کی ہے کہ فوت شدہ لڑکی کی نعش کو اپنے واطن لانے کیلئے بنگلہ دیشی سرکار سے بات کرکے اس کیلئے فوری طور پر اقدامات اُٹھائے جائیں تاکہ مذکورہ طالبہ کی آخری رسومات اداکئے جاسکیں۔ ادھر نیشنل کانفرنس کے کارگزار صدر اور سابق ریاستی وزیر اعلیٰ عمر عبداللہ نے بھی سماجی ویب سائٹ ٹویٹر پر ٹویٹ کرتے ہوئے وزیر خارجہ سشما سوراج سے اپیل کی ہے کہ مذکورہ لڑکی کی نعش کو اہلخانہ کے سپرد کرانے کیلئے اقدامات اُٹھائیں تاکہ اس کی آخری رسومات اداکی جاسکے ۔( سی این آئی )

تبصرے
Loading...