کشمیر میں ناراض لوگوں کو منانے اوروادی میں تعمیر و ترقی کیلئے اقدمات اُٹھائیں گے / وزیر اعظم مودی

ہم بھارت کو نئی اونچائیوں تک پہنچانے کیلئے سب کو ساتھ لیکر چلنا چاہتے ہیں

0 30

سرینگر/26جون/سی این آئی// وزیر اعظم نریندر مودی نے کہا کہ کنیا کماری تک کشمیر تک بھارتی شہری ہمارے اپنے ہیں اور کسی راجیہ میں اگر کوئی ہمارا مخالف ہے تو وہاں ہمارے دوست بھی بے شمار ہوسکتے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ آسام، جھار کھنڈ اور کشمیر میں ہم تعمیر و ترقی اور اپنے ناراض لوگوں کو منانے کا کام کررہے ہیں جس سے ہمیں کام کرنے میں آسانی حاصل ہوگی ۔راجیہ سبھا میں صدرجمہوریہ کے خطاب پراظہارتشکرکرتے ہوئے وزیراعظم نریندرمودی نے ایوان سے آج دوسرے روز بھی خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم نے کہا کہ ہم نے کشمیر میں تعمیر و ترقی کا نیا دور شروع کرنا ہے کرنٹ نیوز آف انڈیا کے مطابق پارلیمنٹ کی کارروائی کے دوران آج دوسرے روز وزیر اعظم نریندر مودی نے ممبران سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ دہائیوں بعد بھارت میں ایک ایسی حکومت قائم ہوئی ہے جو صرف اور صرف عوام اور دیش کا بھلا چاہتی ہے ۔ انہوںنے کانگریس کا نام لئے بغیر کہ انہوں نے زمینی حقائق اور زمینی صورتحال پر کبھی نظر نہیں رکھی بلکہ صرف اپنے اقتدار کی اور نظریں گھاڑ دیں ۔ وزیر اعظم نے کہا کہ ہمارا نعرہ ہے سب کا ساتھ سب کا وکاس اور اس میں ہم بلا مذہب و ملت ایک سو تیس کروڑ بھارتیوں کو مد نظر رکھ کر آگے بڑھنا چاہتے ہیں جس کیلئے ہم کشمیر سے کنیاکماری تک تمام راجیوں میں لوگوں کو ساتھ لیکر چلیں گے اور ان اگر کسی ریاست میں کوئی ناراض ہے تو اس کا مطلب یہ نہیں کہ وہاں ہمارا کوئی دوست نہیں ہے بلکہ وہاں ہمارے بہت سے دوست بھی ہوں گے تاہم ہم ناراض لوگوں کی ناراضگی کو دور کرنے کی بھر پور کوشش کریں گے ۔ وزیر اعظم نے آسام، جھار کھنڈ اور کشمیر کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ ہم ان راجیوں میں تعمیر و ترقی کا نیا دور شروع کررہے ہیں اور ان ریاستوں میں ناراض لوگوں کو منانے کیلئے بھی ہم اقدامات اُٹھارہے ہیں اس کیلئے ہم اپنے آپ کو چھوٹا تصور نہیں کرتے ہمارا مقصد یہ ہے کہ ہم اپنے عوام کی تکالیف کو دور کریں ۔ انہوں نے کہاکہ کچھ لوگ اس قدر اُوپر نظریں اُٹھائے رکھتے ہیں کہ انہیں نیچے رہنے والے لوگوں کی طرف دھیان نہیں رہتا اور ہم نیچے دیکھ کر ہی اُوپر جانا چاہتے ہیں ۔ انہوںنے کہا کہ بھارت کو پانچویں اقتصادی طور مضبوط ممالک میں شامل کرنے کی دوڑ میں ہمیں سب کا ساتھ چاہئے ۔

تبصرے
Loading...