کشتواڑ کرفیو میں تین گھنٹوں کی نرمی ، لوگوں نے راحت کی سانس لی

بازاروں میں جم کر خریداری ، ضلع میں چھ روز بعد موبائیل انٹر نیٹ بھی بحال

0 77

سرینگر: جموں کے کشتواڑ ضلع میں آ ر ایس ایس لیڈر اور اس کے ذاتی محافظ کی ہلاکت کے بعد پید ا شدہ صورتحال کے پیش نظر ضلع میں جاری کرفیو کے بیچ سوموار کو تین گھنٹوں کی ڈھیل دی گئی جبکہ چھ روز بعد موبائیل انٹر نیٹ خدمات بحال کی گئی ۔ کرفیو میں ڈھیل کے ساتھ ہی لوگوں نے بازاروں کا رخ کیا جس دوران انہوں نے کھانے پینے کے سامان کی جم کر خریداری کی ۔ تاہم ڈھیل کے دوران کوئی نا خوشگوار واقعہ پیش نہیں آیا ۔ سی این آئی کے مطابق جموں کے کشتواڑ ضلع آر ایس ایس کارکن اور اس کے ذاتی محافظ کی ہلاکت کے بعد ضلع میں چھ دنوں سے جاری کرفیو میں سوموار کو تین گھنٹو ں کی ڈھیل دی گئی ۔ ڈھیل کے ساتھ ہی لوگوں بندشیں ہٹائی گئی جس کے ساتھ ہی لوگوں نے گھروں سے باہر نکل کر بازاروں کا رخ کیا۔ واضح رہا ہے کہ ضلع میں اس وقت کرفیو کا نفاذ عمل میںلایا گیا تھا جب منگل کو نا معلوم مسلح افراد نے آر ایس ایس کے لیڈر چندرا کات سنگھ اور اُس کے ذاتی محافظ ہلاک ہو گیا تھا ۔ آر ایس ایس لیڈر اور اس کے ذاتی محافظ کی ہلاکت کے بعد ضلع کشتواڑ میں کرفیو کا نفاذ عمل میں لایا گیا جو سوموار کو مسلسل ساتویں روز بھی رہا ۔ حملے کے بعد کشتواڑ اور ڈوڈہ میں کشیدگی کو دیکھتے ہوئے انٹر نیٹ سروس بھی معطل کی گئی ہے جس کو چھ روز بعد بحال کیا گیا ۔معلوم ہوا ہے کہ قصبے میں ساتویں روز بھی کرفیو رہی جس کے نتیجے میں معمول کی زندگی متاثر رہی ۔تاہم سوموار کے بعد و پہر کرفیو میں تین گھنٹے کی نرمی لائی گئی جس کے ساتھ ہی لوگوں نے راحت کی سانس لی ، بتایا جاتا ہے کہ کرفیو میں ڈھیل کے اعلان کے ساتھ ہی لوگوں نے بازاروں اور دیگر کئی اہم مقامات کا رخ کیا جس دوران انہوں نے ضروری ساز و سامان کی خریداری کی تین گھنٹوں تک کرفیو میں ڈھیل دی گئی تھی تاہم کوئی نا خوشگوار واقعہ پیش نہیں آیا ۔

تبصرے
Loading...