پی اپم پیکیج کے تحت تعینات مائیگرنٹ پوسٹوں پر اساتذہ کے وارے نیارے

گذشتہ پندرس برسوں سے کوئی بھی کسی سکول میں اپنی ڈیوٹی پر حاضر نہیں ہوا

0 24

سرینگر/22جون/سی این آئی// وادی میں پی ایم پیکیج کے تحت مائیگرنٹ پوسٹوں پر تعینات اساتذہ کبھی بھی اپنی ڈیوٹیاں انجام نہیں دے رہے ہیں جبکہ متعلقہ افسران جب ان کو ڈیوٹی پر حاضر رہنے کو کہتے ہیں تو انہیں نوکری سے ہاتھ دھونے کی دھمکی دی جارہی ہے ۔ کرنٹ نیوز آف انڈیا کے مطابق وادی کشمیر کے مختلف تعلیمی زونوں کے تحت آنے والے سکولوں میں ایک یا دو مائیگرنٹ پوسٹوں پر پی ایم پیکیج کے تحت تعینات اساتذہ ہیں جن کے بارے میں معلوم ہواہے کہ مذکورہ ٹیچر کبھی بھی اپنی ڈیوٹیوں پر حاضر نہیں ہورہے ہیں ۔ ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ آج سے دس پندرہ برس پہلے پرائم منسٹر پیکیج کے تحت ہزاروں کی تعداد میں مائیگرنٹوں کو وادی کے مختلف سکولوں میں پی ایم پیکیج کے تحت تعینات کیا گیا تاہم اپنی تعیناتی کے بعدکوئی بھی مائیگرنٹ پوسٹ پر تعینات ٹیچر اپنی ڈیوٹی پر حاضر نہیں ہوتا ہے ۔ایک طرف سرکاری سکولوں میں اساتذہ کی خاصی کمی پائی جارہی ہے دوسری طرف مذکورہ سکیم کے تحت تعینات اساتذہ صرف سرکاری خزانے سے رقومات وصول کررہے ہیں تاہم ڈیوٹی پر حاضر ہونے کا نام نہیں لیتے ۔ ذرائع نے بتایا کہ اگر کوئی بھی افسر ان ٹیچروں کو ڈیوٹی پر حاضر رہنے کو کہتا ہے تو افسران کو دھمکی دی جاتی ہے کہ اُس کو اپنی نوکری سے ہاتھ دھونا پڑے گا۔ بصورت دیگر جو مائیگرنٹ ٹیچر کہے اسی پر عمل کرتے رہو۔ کئی زونل افسران نے سی این آئی کے ساتھ نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتایا کہ سکولوں میں ان کی حاضری ہر روز لگتی ہے لیکن ذاتی طور پر کوئی بھی ٹیچر سکول یا دیگر تعلیمی شعبوں میں حاضر ہوکر ڈیوٹی نہیں دے رہا ہے جس کی وجہ سے وادی میں شعبہ تعلیم کافی حد تک متاثر ہوگیا ہے ۔ انہوںنے کہاکہ یہاں پر نامساعد حالات اور موسم کی دگرگوں صورتحال کی وجہ سے سال کے بارہ مہینوں میں اساتذہ چار پانچ ماہ چھٹی کرتے ہیں تاہم مذکورہ اساتذہ باقی بچے دنوں میں بھی سکول نہیں آرہے ہیں ۔ انہوںنے کہا کہ اگر کوئی مقامی استاد اس طرح کی حرکت کرے گا تو اس کے خلاف فوری طور پر کارروائی کی جاتی ہے لیکن بدقسمتی سے مذکورہ سکیم کے تحت تعینات اساتذہ کے خلاف محکمہ ایکشن لینے میں ڈر اور خوف محسوس کررہا ہے ۔

تبصرے
Loading...