پاکستان کی پیشکش کے بعد دبئی میں ٹریک ٹوڈپلومیسی کا باضابطہ طور پرآغاز

بھارت میں نئی حکومت کاقیام عمل میںآ نے کے بعد خطے کی صورتحال میںنمایاں تبدیلی کے امکانات /ذرائع

0 103

سر ینگر /اے پی آ ئی: پاکستان کی جانب سے بھارت کو جنگبندی معاہدے اورتعلقات کو بہتر بنانے کی نئی پیشکش کے بعد دبئی میں بھارت پاکستان کے کئی سابق سفارت کار فوجی افسران تاجر اوردانشور سر جوڑ کر دونوں ممالک کے مابین سرکاری سطح پرمزاکرات شروع کرانے کے طور طریقوں پرتبادلہ خیال کررہے ہیں ۔وزیراعظم کے دفتری ذرائع نے اس با ت کی تصد یق کی کہ ٹریک ٹو ڈپلومیسی کاآغاز ہوا ہے اور اس بات چیت کیلئے وزیراعظم کے دفترنے بھی ہری جھنڈی دکھائی ہے ￿۔بآورکیا جا رہاہے کہ اگر مرکز میں بھارتیہ جنتا پارٹی کی حکومت دوبارہ قائم ہوئی تو بھارت پاکستان کے درمیان سرکاری سطح پرنہ صرف مذاکرات شروع ہونگے بلکہ کئی اہم نو عیت کے فیصلے بھی لئے جاسکتے ہیں۔اے پی آ ئی کوسفارتی ذرائع نے جوتفصیلات فراہم کی ہے ان کے مطابق پاکستانی وزیر اعظم کی جا نب سے بھارت کو جنگ بندی معاہدے بہتر تعلقات قائم کر نے کے سلسلے میں نئی پیشکش کے بعد برصغیرکے دو نیو کلیئرطاقتوں کے درمیان سرکاری سطح پر مذاکرات شروع کرا نے خطے میںاعتمادسازی بحال کرنے بات چیت کوپٹری پرلانے اور 2003جیسا ماحول قا ئم کرنے کیلئے بھارت پاکستان کے کئی سابق سفارت کات سابق فوجی افسران ،دانشور اربڑے تاجر دبئی میںسرگرم ہوگئے ہیںاور ٹریک ٹودپلومیسی کومضبوط و مستحکم بنانے کیلئے پاک بھارت وزراء اعظم کے دفتروں سے باضابطہ طور پر ہری جھنڈی دکھائی گئی ہے معتبر زرائع کے مطابق وزیراعظم ہند نریندر مودی نے ٹریک ٹوسطح پر دوبارہ با ت چیت کے عمل کو شروع کرنیکی کارروائی کوخوش آ ئیند قراردیتے ہوئے کہا کہ اگر اسسے دونوںممالک کے مابین اختلافات ختم ہوسکتے ہے اوردونوں ممالک کو قریب آ نے کا موقع ملے گا توٹریک ٹوڈپلومیسی کو مذیدمضبوط و مستحکم بنانے کیلئے اقدامات اٹھائے جائے ۔باخبرذرائع کے مطابق قومی سلامتی کے مشیر اجیٹ ڈھول ہے وزیراعظم کو ٹریک ٹو ڈپلومیسی کے بارے میںتمام جانکاری فراہم کی ہے اورانہیںاس بات سے آ گاہ کیاکہ ان کے پاکستانی ہم منصف عمران خان بھی ٹریک ٹو ڈپلومیسی کومضبوط مستحکم بنانے کے حق میں ہے تاکہ دونوں ممالک ایک دوسرے کے نقطہ نگاہ کو سمجھ سکے اورزمینی صورتحال کو مد نظر رکھ کر سرکاری سطح پرمذاکرات کادور شروع ہوسکے ۔باوثوق ذرائع کے مطابق اگر مرکزمیںنریندر مودی کی سربراہی میںحکومت دوبارہ بن گئی تو نہ صرف بھارت پاکستان کے مابین بات چیت کاسلسلہ شرع ہوگا بلکہ کئی اہم نوعیت کے فیصلے بھی لئے جاسکتے ہے ۔پاکستانی وزیراعظم کے قریبی ذرائع نے اس بات کی تصد یق کی کہ بھارت میں پارلیمنٹ الیکشن مکمل ہونے نئی حکومت کا قیام عمل میںآنے کے بعد خطی کی صورتحال میںبڑی تبدیلیاں رونماء ہونگی ۔،باوثوق ذرائع کے مطابق پاکستان کے وزیراعظم بھار ت کے دورے پربھی اا سکتے ہے۔ذرائع کے مطابق بین الاقوامی برادری نے بھی دونوں ممالک کو تلقین کی ہے کہ وہ آ پسی اختلافات کوختم کرکے مسائل کی حل کی طر ف اپنی توجہ مرکوز کریں ۔

تبصرے
Loading...