پائین شہر میں نماز جمعہ کے بعد احتجاجی مظاہرے

نوجوانوں اور پولیس کے درمیان پُر تشدد جھڑپیں ،ٹیر گیس شلنگ اور پیپر گیس استعمال

0 980

سرینگر/31مئی/سی این آئی// نماز جمعہ کے بعد احتجاجی مظاہروں کا سلسلہ جاری رکھتے ہوئے پائین شہر کے نوہٹہ علاقے میں جمعہ کے بعد احتجاجی مظاہرو ں کے بیچ نوجوانوں اور پولیس کے درمیان پر تشدد جھڑپیں ہوئی جس دوران فورسز نے مشتعل مظاہرین کو تتر بتر کرنے کیلئے ٹیر گیس شلنگ کی گئی ۔ سی این آئی کے مطابق جمعتہ الوداع کے موقعہ پر نماز جمعہ کے بعد شہر خاص کے نوہٹہ علاقے میں اس وقت تشدد بھڑک اٹھا جب بعد نماز جمعہ شہر خاص میں کے دوران نقاب پوش نوجوانوں نے حسب روایت سبز ہلالی پرچم لہرا کر احتجاجی مظاہر ے کئے ۔ ۔معلوم ہوا ہے کہ نماز جمعہ کے فوراً بعد نوجوانوں کی ٹولیاں جامع مسجد اور نوہٹہ چوک میں نمودار ہوئی جہاں انہوں نے پہلے پاکستانی سبز ہلالی پرچم کو اپنے ہاتھوں میں لہرایا۔ ۔ اس دوران نوجوانوں نے جگہ جگہ جامع مسجد کی طرف جانے والے راستوں پر رکاوٹیں کھڑی کی اور ٹیر جلا کر فورسز کی نقل وحمل کو محدود کرنے کی کوشش کی۔ نمائندے کے مطابق احتجاجی مظاہرین جونہی نعرہ بازی کرتے ہوئے رنگر سٹاپ کے نزدیک پہنچے تو یہاں پہلے سے تعینات پولیس اور فورسز کی ایک بھاری جمعیت نے انہیں روکا اور آگے جانے کی اجازت نہیں دی جس دوران مظاہرین اور فورسز کے درمیان شدید نوعیت کی مزاحمت ہوئی۔ فورسز نے مظاہرین کو منتشر کرنے کیلئے ٹیر گیس شلنگ کی اور مرچی گیس کا استعمال کیا۔ اس موقعہ پر نوجوان مشتعل ہوئے اور انہوں نے فورسز پر شدید نوعیت کی خشت باری کی جس کے ساتھ ہی رنگر سٹاپ سے لیکر نوہٹہ چوک تک فورسز اور نوجوانوں کے درمیان جھڑپوں کا سلسلہ شروع ہوئی جو کئی گھنٹوں تک جاری رہا۔ادھر وادی کشمیر کے مختلف علاقوں میں نماز جمعہ کے بعد احتجاجی ریلیاں بر آمد ہوئی ۔ (سی این آئی )

تبصرے
Loading...