ویڈیو: کشمیر میں جنگل راج قائم ،ایسا لگتا ہے کہ جموں کشمیر کاملک کے ساتھ الحاق نہیں / محبوبہ مفتی

کھرم میں قافلے پر سنگبازی کے بعد کسی نوجوان کو گرفتار کیا گیا ہے ان کا رہا کیا جائے

0 118

 

سرینگر: فوجی اہلکاروں کی طرف سے سب ضلع مجسٹر یٹ ڈورو اننت ناگ کی مار پیٹ پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے پی ڈی پی صدر اور سابق وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی نے بدھ کو کہا کہ کشمیر میں جنگل راج قائم ہے۔اسی دوران انہوں نے پولیس سے اپیل کی ہے کہ گزشتہ دنوں ان کے قافلے پر حملے کے بعد اگر کسی نوجوان کو گرفتار کیا گیا ہے ان کا رہا کیا جائے ۔ سی این آئی کے مطابق جنوبی ضلع اننت ناگ میں انتخابی ریلی سے خطاب کرنے کے بعد میڈیا نمائندوں سے بات کرتے ہوئے پی ڈی پی صدر اور اننت ناگ حلقہ انتخاب کی پارلیمانی امید وار محبوبہ مفتی نے کہا کہ کشمیر میں کوئی قانون ہی موجود نہیں ہے۔انہوں نے کہا کہ مجسٹریٹ کو دیگر ملازمین کے ہمراہ پیٹا جارہا ہے، ہائی وے کو بند کیا گیا ہے۔،قیدیوں کا جیلوں کے اندر زد و کوب کیا جارہا ہے،معرکہ آرائیوں سے جو لاشیں بر آمد ہوتی ہیں، اْن کی توہین کی جاتی ہے اور اْنہیں کمیکلز سے جلایا جاتا ہے ”۔محبوبہ کا کہنا تھا کہ ایسا لگتا ہے کہ جموں کشمیر نے اْس ملک کے ساتھ الحاق نہیں کیا ہے جس کا انتخاب شیخ محمد عبد اللہ اور مہاراجہ ہری سنگھ نے کیا تھا۔انہوں نے کہا”جس ملک کے ساتھ ہم نے الحاق کیا تھا اْس میں مسلمان، ہندو، سکھ، سب برابر تھے”۔انہوں نے کشمیر شاہراہ پر پابندی کو آمرانہ فیصلہ قرار دیا۔انہوں نے اننت ناگ میں مجسٹریٹ کو فوج کے ہاتھوں پیٹے جانے کی بھی مذمت کی۔سابق وزیر اعلیٰ محبوبہ نے کہا کہ اْنہوں نے وزیر اعظم نریندر مودی اور وزیر داخلہ راجناتھ سنگھ پر واضح کر رکھا تھا کہ اگربھاجپا نے ریاست جموں کشمیر کی خصوصی پوزیشن کے ساتھ چھیڑ خوانی کی کوشش کی تو پیپلز ڈیمو کریٹک پارٹی(پی ڈی پی) کے پاس حکومت چھوڑنے کے سوا کوئی چارہ نہیں رہے گا۔ اسی دوران انہوں نے گزشتہ دنوں کھرم بجبہاڑہ میںا ن کے قافلے پر ہوئے سنگبازی کے واقعہ پر بات کرتے ہوئے پولیس سے اپیل کی ہے کہ اگر اس معاملے میں کسی نوجوان کو گرفتار کیا گیا ہے اس کو جلد از جلد رہا کیا جائے ۔ خیال رہے کہ گزشتہ دنوں محبوبہ مفتی کے قافلے پر حملہ ہوا جس دوران اس کے ذاتی محافظ کو چوٹ آئی جبکہ گاڑی کو نقصان پہنچ گیا ۔

تبصرے
Loading...