ویڈیو: پاک زیر انتظام کشمیرکو’’ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے ’’آزاد کشمیر‘‘قراردیا

تنازعہ کشمیر کو حل کرنے کیلئے ہندوپاک مذاکراتی عمل کی بحالی پر دیا زور

0 24

سرینگر: سابق ریاستی وزیر اعلیٰ اور نیشنل کانفرنس کے سربراہ ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے ’’پاکستانی زیر انتظام کشمیر ‘‘کو آزاد کشمیر قراردیا ۔ذرائع ابلاغ کے نمائندوں کے ساتھ بات کرتے ہوئے ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے کہا کہ بھارت کو کشمیر کے لوگوں کے ساتھ بات کرنی چاہئے ساتھ ہی انہوں نے پاک زیر انتظام کشمیر کو ’’آزاد کشمیر ‘‘کے نام سے بولتے ہوئے کہاکہ بھارت کو ’’آزاد کشمیر ‘‘کے لوگوں کے ساتھ بھی بات کرنی چاہئے ۔ کرنٹ نیوز آف انڈیا کے مطابق نیشنل کانفرنس کے سربراہ اور سابقہ ریاستی وزیر اعلیٰ ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے کشمیر کو متنازعہ قراردیتے ہوئے کہا کہ اقوام متحدہ کے مبصرین آج بھی آزاد کشمیر اور اس کشمیر میں ہیں جو یہاں حالات کا مشاہدہ کررہے ہیں اور سالانہ رپورٹ اقوام متحدہ کو سونپ رہے ہیں انہوںنے کہا کا کہ بھارت کو تنازعہ کشمیر کے حل کیلئے کبھی نہ کبھی بات چیت شروع کرنی ہی ہوگی ۔ ڈاکٹر فاروق نے اس دوران (پی اے کے)پاک زیر انتظام کشمیر کو ’’آزاد کشمیر ‘‘کہتے ہوئے کہا کہ بھارت کو اس پار کے کشمیریوں اور آزاد کشمیری کے لوگوں سے بھی بات چیت شروع کرنی چاہئے تاکہ ریاست کی موجودہ صورتحال پر قابو پایا جاسکے ۔ اپنی والدہ،بیگم اکبر جہاں کی19ویں برسی کے سلسلے میں منعقدہ ایک تقریب کے حاشیوں پر نامہ نگاروں سے بات کرتے ہوئے فاروق نے کہا”ہر سیاسی مسئلے کا ایک سیاسی حل چاہئے، کشمیر بھی ایک سیاسی مسئلہ ہے جس کا حل ناگزیر ہے”۔انہوں نے کہا کہ کشمیر مسئلے کا ایک ایسا حل ضروری ہے جس سے اس کا ہر فریق بشمول بھارت اور پاکستان راضی ہوں۔فاروق نے مزید کہا”اْس سیاسی حل کو ریاست کے تینوں خطوں یعنی جموں، لداخ اور کشمیر کی حمایت حاصل ہونی چاہئے”۔فاروق نے پارٹی کے سینئر ممبران کے ہمراہ اپنی مرحوم والدہ کی قبر پر جاکر دعا کی۔( سی این آئی )

تبصرے
Loading...