ویڈیو: سوپور میں آ گ کی شبانہ واردات میں، چا ر رہاشی مکان او ر ان میں موجود ہر قسم کاساز وسامان راکھ کے ڈھیر میں تبدیل

سرینگر13 مارچ /: شمالی قصبہ سوپور کے چھانہ کھن میں ایک ہولناک واردات میں چا ر رہاشی مکان او ر ان میں موجود ہر قسم کاساز وسامان راکھ کے ڈھیر میں تبدیل ہوگیا۔اور کروڑوں روپے مالیت کی املاک دیکھتے ہی دیکھتے راکھ کے ڈھیر میں تبدیل ہوئی۔ سی این ایس کے مطابقشمالی قصبہ سوپور کے چھانہ کھن علاقے میں منگل اور بدھ کی درمیانی رات کے دوران خضر محمد ملہ کے تین مزلہ مکان سے اچانک آگ نمودار ہوئی جس نے آناً فاناً مزید چار مکانات کو اپنی لپیٹ میں لے لیا۔اگر چہ مقامی لوگوں نے آگ کو پھیلنے سے روکنے کو شش کی ظاہر ہوئی اور کئی سلنڈر دھماکوں کیساتھ پھٹنا شروع ہوئے جسکے نتیجے میں آگ تیزی کے ساتھ پھیل گئی۔ خوفناک شعلوں نے فائر سروس عملہ کو نزدیک نہیں آنے دیا۔آ گ کے شعلے بلند ہو تے ہی علاقہ میں خوف و دہشت کا ماحول پھیل گیا اور نزدیکی لوگ چیختے چلاتے اپنے گھروں سے باہر آئے ۔عینی شاہدین کے مطابق آگ اس قدر بھیانک تھی کہ دور دور سے اس کے شعلے نظر آرہے تھے۔بتایا جاتا ہے کہ آگ کی یہ واردات مکان میں موجود ایک گیس سیلنڈر پھٹ جانے سے پیش آگئی۔ عینی شاہدین کے مطابق فا ئر سروسز عملہ وقت پرجائے واردات پر پہنچا اور آگ کو مزید پھیلنے سے بچالیاہے تاہم اس سے قبل ہی ان چار مکانوں میں موجود لاکھوں روپے مالیت کا ساز وسامان اور املاک راکھ کے ڈھیر میں تبدیل ہوگیاہے۔ادھر محکمہ فائر اینڈ ایمر جنسی سروسز کا کہنا ہے کہ آ گ سے ہوئے نقصان کا فوری تخمینہ لگانا ممکن نہیں اور مکمل جائزہ لینے کے بعد ہی کوئی حتمی رائے قائم کی جاسکتی ہے۔انہوں نے بتایا کہ گیس سیلنڈر آگ لگنے کی وجہ فوری طور معلوم نہیں ہوسکی ہے۔انہوں نے کہا کہ آگ بجھانے کے دوران فائرسروس عملے کو سخت ترین مشکلات کا سامنا کرنا پڑا اور تقریبا تین گھنٹے بعد آگ پر قابو پایا گیا۔انہوں نے بتایا کہ اس معاملے کی نسبت پو لیس نے بھی کیس درج کر لیا ہے ۔

تبصرے
Loading...