ویڈیو: ذاکر موسیٰ کی ہلاکت کے خلاف مختلف تعلیمی اداروں کے طلبہ کا احتجاج

اسلامہ کالج ، سوپور اور گاندربل میں طلبہ اور فورسز کے مابین شدید جھڑپیں ، نصف درجن طلبہ زخمی

0 402

 

سرینگر: عسکری کمانڈر ذاکر موسیٰ کی ہلاکت کے خلاف وادی کے مختلف تعلیمی اداروںکے طلبہ نے منگلوار کو سخت احتجاج کیا جبکہ احتجاجی مظاہرین اور فورسز و پولیس کے مابین شدید جھڑپیں بھی ہوئی ۔ سوپور میں کالج طالب علموں اور پولیس کے مابین شدید تصادم آرائی ہوئی جبکہ سنٹرل یونیورسٹی کشمیر گاندربل کمپش اور ڈگری کالج گاندربل کے طلبہ نے بھی ذاکر موسیٰ کی ہلاکت کے خلاف سخت احتجاجی مظاہرے کئے جبکہ طلبہ اور پولیس کے مابین شدید جھڑپیں ہوئی ۔ اس دوران منگل کو سرینگر میں قائم امر سنگھ کالیج کے اندر درس و تدریس کا کام معطل رکھنے کا فیصلہ کیا گیاحکام کے مطابق یہ فیصلہ کالیج میں پیر کو امتحان میں شامل ہونے والے چند طالب علموں کو پیٹنے اور توڑ پھوڑ کے واقعات کے پس منظر میں لیا گیا ہے۔کرنٹ نیوز آف انڈیا کے مطابق گذشتہ ہفتے جمعرات کو فوج کیساتھ ایک جھڑپ میں عسکری کمانڈر ذاکر موسیٰ کی ہلاکت کے بعد واودی بھر میں دو دنوں تک ہڑتال رہی جبکہ حکام نے چار دنوں تک تمام تعلیمی ادارے بندرکھے اس دوران ذاکر موسیٰ کی ہلاکت کے خلاف مختلف تعلیمی اداروں میں منگلوار کو طلبہ نے سخت احتجاجی مظاہرے کئے جبکہ کئی جگہوں پر فورسز اور مشتعل ہجوم کے درمیان جھڑپیں بھی ہوئی ۔ شمالی کشمیر کے سوپور میں کالیج کے طالب علم منگل کو پولیس اہلکاروں کے ساتھ متصاد م ہوئے۔اطلاعات کے مطابق طرفین کے مابین کالیج کے نزدیک ہی جھڑپیں ہوئیں۔اطلاعات کے مطابق سوپور کالیج کے طالب علموں نے جنگجو کمانڈر ذاکر موسیٰ کی فورسز کے ہاتھوں ہلاکت کیخلاف احتجاج کرتے ہوئے کالیج احاطے سے باہر آنے کی کوشش کی۔تاہم تعینات پولیس اور فورسز اہلکاروں نے اْنہیں ایسا کرنے سے روکا جس کے نتیجے میں وہاں جھڑپیں ہوئیں۔عینی شاہدین کے مطابق احتجاجی طالب علموں نے اہلکاروں پر سنگباری کی اور فورسز اہلکاروں نے جواب میں آنسو گیس کے گولے داغے جس سے وہاں افرا تفری پیدا ہوئی۔اس دوران سنٹرل یونیورسٹی کشمیر کے گاندربل کمپس اور ڈگری کالج گاندربل کے طلبہ نے ذاکر موسیٰ کی ہلاکت کے خلاف سخت احتجاجی مظاہرے کئے جس دوران مظاہرین اور پولیس کے مابین جھڑپوں کاسلسلہ شروع ہوا جس کی وجہ سے قصبہ میں سخت کشیدگی اور تنائو کا ماحول پھیل گیا ۔ معلوم ہوا ہے کہ احتجاجی طلبہ ذاکر موسیٰ ، اسلام و آزادی کے حق میں نعرے بازی کررہے تھے ۔ دریں اثناء منگل کو سرینگر میں قائم امر سنگھ کالیج کے اندر درس و تدریس کا کام معطل رکھنے کا فیصلہ کیا گیاحکام کے مطابق یہ فیصلہ کالیج میں پیر کو امتحان میں شامل ہونے والے چند طالب علموں کو پیٹنے اور توڑ پھوڑ کے واقعات کے پس منظر میں لیا گیا ہے۔

تبصرے
Loading...