ووٹ ہی کشمیر کو آزادی دلائے گا/ وزیر اعظم نریندر مودی

’’شدت پسندی ’’کا ہتھیار آئی ای ڈی اور جمہوریت کا ہتھیار ووٹر آئی ڈی

0 151

سرینگر/: وزیر اعظم نریندر مودی کے اپنے اپنے رائے دہی کا حق اداکرنے کے موقعے پر کہا کہ ووٹ ڈالنا ہر بھارتی شہری کا فرض ہے اور یہ ایک ایسی طاقت سے جس سے ہم جمہوریت کو مضبوط بناتے ہیں ۔ نریندر مودی نے کہا کہ دہشت گردی کا ہتھیار آئی ای ڈی ہے جبکہ جمہوریت کی طاقت ووٹر آئی ڈی ہے اور کشمیر کو ظلم و جبر مار دھاڑ اور شدت پسندی سے ووٹ ہی آزادی دلائے گا۔ کرنٹ نیوز آف انڈیا کے مطابق وزیر اعظم نرنیندر مودے نے آج اپنی رائے دہی کا حق اداکرتے ہوئے ووٹ ڈالا۔ ووٹ ڈالنے کے بعد وزیر اعظم مودی بولے۔ دہشت گردی کا ہتھیار آئی ای ڈی، جمہوریت کی طاقت ووٹر آئی ڈی ہے اور ووٹ ہی بھارت کی جمہویت کو اور زیادہ مضبوط کرتا ہے ۔انہوںنے کہا کہ ہم نے تہیہ کررکھا ہے کہ دیش کو شدت پسندی اور نکسواد سے چھٹکارا دلائیں گے اور اس کیلئے لوگوں کو چاہئے کہ وہ کنول کا بٹن دباکر مودی کے حق میں ووٹ ڈالیں ۔ انہوںنے کہا کہ کانگریس پارٹی نے بھارت کی جمہویت کو کھوکھلا کیا ہے اور بھاجپا اس میں جان ڈال رہی ہے ۔ وزیر اعظم نے کشمیر کا ذکر کرتے ہوئے کہاکہ ووٹ ایک ایسی طاقت سے جس سے کشمیر کو شدت پسندی ، مار دھاڑ، ظلم و جبر اور غربت سے آزادی دلائے گا۔ ووٹ کا استعمال کرکے کشمیری عوام ریاست کی تعمیر و ترقی اور امن و خوشحالی کیلئے نیم ڈالیں گے ۔ عام انتخابات 2019 کے تیسرے مرحلے کے لئے آج صبح 7 بجے سے ووٹنگ کا عمل شروع ہو گیا ہے۔ 15 ریاستوں کی کل 117 سیٹوں پر ووٹنگ ہو رہی ہے اور ووٹرز اس میں پورے جوش کے ساتھ حصہ لے رہے ہیں۔عام انتخابات 2019 کے تیسرے مرحلے کے لئے آج صبح 7 بجے سے ووٹنگ کا عمل شروع ہو گیا ہے۔ 15 ریاستوں کی کل 117 سیٹوں پر ووٹنگ ہو رہی ہے اور ووٹرز اس میں پورے جوش کے ساتھ حصہ لے رہے ہیں۔ بہار کی 5، اتر پردیش کی 10، مغربی بنگال کی 5، مہاراشٹر کی 14، کرناٹک کی 14، گجرات کی سبھی 26، جموں و کشمیر کی 1، اڈیشہ کی 6، آسام کی 4، تمل ناڈو کی 1، چھتیس گڑھ کی 7، کیرالہ کی سبھی 20، گوا کی 2، تریپورہ کی 1، دادر حویلی اور دمن دیو کی 1 سیٹ پر ووٹ ڈالے جا رہے ہیں۔ جن 117 سیٹوں پر ووٹنگ ہو رہی ہے وہاں مجموعی طور پر 1622 امیدوار میدان میں ہیں۔جبکہ کشمیر کی اننت ناگ کی سیٹ کیلئے پہلے مرحولے کے تحت آج ووٹنگ ہورہی ہے ۔وزیر اعظم نریندر مودی اور کیرالہ کے وزیر اعلیٰ پینارائی وجین نے اپنے حق رائے دہی کا استعمال کر لیا ہے۔ ان کے ساتھ ہی کئی دیگر اہم سیاسی شخصیتوں نے بھی صبح سویرے ووٹنگ کے حق کا استعمال کیا۔ ووٹنگ سے پہلے وزیر اعظم مودی نے اپنی ماں ہیرابین سے ملاقات کر کے ان کا آشیرواد لیا۔وہیں، مہاراشٹر کے بارامتی میں سپریا سولے نے اپنی فیملی کے ساتھ پولنگ بوتھ پر پہنچ کر اپنے حق رائے دہی کا استعمال کیا۔ بارامتی سے این سی پی صدر شرد پوار کی بیٹی سپریا سولے تیسری بار انتخابی میدان میں ہیں اور ان کے خلاف بی جے پی نے کانچن کْل کو انتخابی میدان میں اتارا ہے۔ بارامتی سیٹ سے شرد پوار سات بار رکن پارلیمنٹ رہ چکے ہیں اور ایک بار اجیت پوار یہاں سے رکن پارلیمنٹ رہے ہیں۔واضح رہے کہ بھارتیہ جنتا پارٹی نے ہر چناوی جلسے میں دہشت گردی کے خاتمے اور پاکستان کے خلاف سٹرائک کی بات کی ہے ۔

تبصرے
Loading...