وادی میں تیز ترار بارشوں اور طوفانی ہوائیوںکی وجہ سے 2خواتین سمیت تین افراد لقمہ اجل

دراس میں برفانی تودے کی زد آکر ایک ہی کنبہ کے کئی افراد لاپتہ ، 150کے قریب بھیڑ بکریاں لقمہ اجل

0 19

ڈوڈہ میں موسمی صورتحال ابتر ہونے سے بدھ کو احتیاطی طور تمام تعلیمی ادارے رہے بند
سرینگر/12جون/سی این آئی/ ریاست جموں وکشمیرکے تینوں خطوںمیں تیز ہوائیوں ،برفانی تودوںاور تیز ترار بارشوں کی وجہ سے اب تک 2خواتین سمیت 3افراد ازجان ہوگئے ہیںاور آدھ درجن کے قریب افراد زخمی ہوئے ہیں ۔جبکہ ایک کنبہ کے تمام افراد لاپتہ ہیں جن کو ڈھونڈنکلانے کے بچائو کارروائیاں جاری ہے ۔ جبکہ 150کے قریب بھیڑ بکریاں بھی آفات سماوی کی وجہ سے ہلاک ہوگئیں ہیں اس دوران6سو کے قریب بھیڑبکریوںکوغرق آب ہونے سے بچالیا گیا ہے ۔ کرنٹ نیوز آف انڈیا کے مطابق ریاست جموں وکشمیر کے تینوں صوبوں میں گذشتہ رات طوفانی ہوائیوں ، تیز و ترار بارشوں اور برفانی تودے گرآنے کی وجہ سے تین افراد لقمہ اجل بن گئے ہیں ۔ وسطی کشمیر کے ضلع گاندر بل میں تیز ہوائوں سے ایک درخت اکھڑ کر ایک ٹینٹ پر گر آیا جس کے نتیجے میں ایک شہری جاں بحق اور دو زخمی ہوگئے۔ حکام کے مطابق محمد یوسف کلاڈا ولد عبدالغنی کلاڈا ساکنہ راجوری ،کنڈ علاقے کے رامواری میں ایک ٹینٹ میں موجود تھا جس پرایک بھاری درخت ٹینٹ پر گر آیا۔اس کے دو رشتہ دار بھی اس حادثے میں زخمی ہوگئے جن کی شناخت غلام حیدر ولد دائود اور عبد الطیف ولد محمود ساکنان راجوری کے طور ہوئی ہے۔ادھر شمالی کشمیر کے بانڈی پوری ضلع میں تیز ہوائیں چلنے کے نتیجے میں ایک بھاری بھرکم درخت جڑ سے اْکھڑ کر ایک رہائشی مکان پر گر آیا جس سے مذکورہ مکان میں موجود دو جواں سال خواتین جاں بحق ہوگئیں۔یہ واقعہ ضلع کے چنداجی نامی علاقے میں پیش آیا جو جنگل کے نزدیک واقع ہے۔ذرائع کے مطابق تیز ہوائوں کے نتیجے میں ایک درخت عارف حسین کے مکان پر جاگرا جس نے مبینہ بانو دختر ذاکر حسین اور شریفہ زوجہ عارف حسین نامی 2 خواتین لقمہ اجل بن گئیں۔آفات سماوی میں دو خواتین کے ازجان ہونے کی تصدیق کرتے ہوئے ایس ایس پی بانڈی پورہ، راہل ملک نے کہا کہ پولیس کی پارٹی جائے واردات پرروانہ ہوگئی ہے اور باقی تفاصیل جمع کی جارہی ہیں۔دریں اثناء ضلع بڈگام میں مقامی لوگوں نے بدھ کو دو گڈریوں اور اْن کے550بھیڑ بکریوں کو ایک مقامی نالے میں بہہ جانے سے بچالیا۔اس نالے میں گذشتہ شب کی موسلادھار بارشوں کے بعد سیلابی صورتحال پیدا ہوئی تھی۔ذرائع کے مطابق دو گڈریے اپنی بھیڑ بکریوں کے ساتھ بدی پورہ میںدودھ گنگا نالے کے بیچوں بیچ سوگام پل کے نزدیک پھنس کر رہ گئے تھے۔ذرائع نے کہا کہ گڈریے نالے کے پانی میں اضافے کی وجہ سے دوسری طرف جانے سے قاصر تھے۔اس دوران مقامی لوگوں نے وقت پر متحرک ہوکر بچائو کارروائیاں عمل میں لاتے ہوئے ہنگامی بنیادوں پر ایک عارضی پل تیار کیا جس کے سہارے گڈریوں اور اْن کے مال و اسباب سمیت بچالیا گیا۔سی این اائی کے مابق ادھر دراس کرگل کے گوموری علاقے میں اُس وقت سینکڑو بھیڑ بکریاں لقمہ اجل بن گئیںجب نزدیکی پہاڑی سے ایک برفانی تودا گرآیا جس کے نتیجے میں نزدیک ہی موجود بھیڑ بکریاں اس کی زد میں آگئی ۔ ذرائع کے مطابق برفانی تودے کی زد میں آکر ایک ہی خاندان کے کئی افراد بھی لاپتہ ہوگئے ہیں جن کو تلاش کرنے کیلئے پولیس اور مقامی لوگوںنے بچائوکارروائیاں شروع کی ہے تاہم آخری اطلاع ملنے تک کسی کو بھی زندہ یامردہ برآمد نہیں کیا گیا ۔ اس حادثے میں لاپتہ ہونے والے افراد کی فوری طور پر شناخت نہیں ہوسکی۔ اس دوران صوبہ جموں کے ڈوڈہ میں موسلا دھار بارشوں اور تیز طوفانی ہوائیوںکی وجہ سے ضلع میں ریڈ الرٹ جاری کیا گیا ہے اور سیلابی صورتحال سے نمنٹنے کیلئے سرکاری مشنری کو متحرک کیا گیا ہے ذرائع کے مطابق ضلع انتظامیہ نے بدھ کو موسلادھار بارشوں سے پیدا صورتحال کے پیش نظر ریڈ الرٹ جاری کرتے ہوئے سکولوں کو بند رکھنے کے احکامات صادر کرلئے۔چیف ایجو کیشن آفیسر،طارق حسین خوجہ کے مطابق محکمہ موسمیات نے مزید موسلادھار بارشوں اور پسیاں گر آنے کی پیش گوئی کر رکھی ہے جس کے پیش نظر آج کیلئے سکولوں کو بند رکھنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔محکمہ موسمیات نے لوگوں کو احتیاط کے طور پسیاں گر آنے والے علاقوں سے دور رہنے کی صلاح دے رکھی ہے۔واضح رہے کہ گزشتہ رات ریاست جموں و کشمیر کے تینوں صوبوں میں تیز ہوائیوں، بارشوں اور برفباری ہوئی جس کی وجہ سے لوگوں میں سخت تشویش کی لہر دوڑ گئی جبکہ وادی کشمیر میں رات بھر تیز ہوائیوں، بجلی کڑکنے بادل گرجنے کے ساتھ ساتھ موسلہ دھار بارشوں کا سلسلہ صبح تک جاری رہا جس کی وجہ سے شمالی کشمیر کے کئی علاقوں کے ندی نالوں میں طغیانی آنے سے سیلابی صورتحال پیدا ہوئی تاہم وادی میں آج صبح سے موسم خشک رہا۔ (سی این آئی)

تبصرے
Loading...