مرکز میں نئی حکومت اور عیدالفطر سے پہلے سر گرم عسکریت کے خلاف فیصلہ کن آ پریشن

وزارت دفاع وزارت داخلہ کی ہری جھنڈی ،فوج نیم فوجی دستے جموں کشمیرپولیس متحرک

0 265

سر ینگر /اے پی آ ئی: مرکز میں نئی حکومت کا قیام عمل میں آ نے سے پہلے ریاست جموں کشمیر میں عسکریت کے خلاف فیصلہ کن کارروائی عمل میںلا نے کیلئے فوج نیم فوجی دستوں جموں کشمیرپولیس کی جانب سے بڑے پیمانے پرآ پریشن شرع کرنے کافیصلہ کیا گیاہے کہ تاکہ مرکز میں نئی حکومت کا قیام عمل میںآ نے کے بعد حالا ت کی بہتری امن امان کو قائم رکھنے ریاست میں تعمیر و ترقی کویقینی بنانے کیلئے اقدامات اٹھائے جاسکے ۔پاکستانی زیر انتظام کشمیر سے مذید عسکریت پسندوںکے در اندازی کے امکانات کومدنظر رکھتے ہوئے وزارت دفاع نے عیدالفطر اور مرکز میں نئی حکومت کوقیام عمل میں آ نے سے پہلے اسطرح کے آ پریشن کو ہری جھنڈی دکھائی ہے ۔اے پی آ ئی کواس ضمن میں ذرا ئع نے جوتفصیلات فراہم کی ہے ان کے مطابق وزارت دفاع ریاست جموں کشمیر میں عسکریت کے خلاف بڑے پیمانے پرفیصلہ کن آپریشن شرع کرنے کے سلسلے میں تمام سر گرمیوںکو آ خری شکل دے رہاہے فوج نیم فوجی دستوں اور جموں کشمیر پولیس کی جانب سے بیک وقت سرحدوں جنگلوں بستیوں کا محاصرہ کرکے بڑے پیمانے پر عسکریت پسندو ں کے خلاف تلاشی کارروائیاں عمل میں لا ئی جائیگی فوج نیم فوجی دستوں اور جموں کشمیر پولیس کواپنے اپنے ذرائع نے وادی میں عسکریت پسندوںکی موجودگی سرگرمیوں کے بارے میں جواطلاعات فراہم کی ہے انہیں ایک دوسرے کیساتھ شعر کرکے جنگجوںکے خلاف آ پریشن شروع کیا جارہاہے تاکہ نہ صرف وادی میں سرگرم عسکریت پسندوں پر دباؤ کو اور بڑھا دیا جائے بلکہ موسم میںبہتری آ نے اور برف پگل جانے کے بعد دراندازی کرنے والے جنگجوں تک یہ پیغام پہنچایا جا سکے کہ اب ان کی دراندازی مشکل ہی نہیں ناممکن ہے ۔ذرائع کے مطابق وزارت داخلہ وزارت دفاع کے اعلیٰ حکام کی خصوصی میٹنگ نئی دہلی میں منعقد ہوئی جس میں ریاست کے تازہ ترین صورتحال کے بارے میںتبادلہ خیال کیا گیا اور سرگرم عسکریت پسندوں کیخلاف بڑے پیمانے پرآ پریشن شروع کرنے کے بارے میں اٹھائے جانے والے اقدامات پربھی ایک دوسرے کے خیالات جاننے کی کو شش کی گئی ۔ذرائع کے مطابق وزارت دفاع نے دو ٹوک الفاظ میں اس با ت کاعندیہ دیا ہے کہ آ پریشن کلین اپ کومذید وسیع کیا جائیگا اور ریاست خاص کروادی کشمیرمیں عسکریت کوکچلنے کیلئے سختی کیساتھ اقدامات اٹھائے جائے اور اس سلسلے میٰں فوج کوئی بھی دقیقہ فروگزاشت نہیں کرنے والی ہے۔وزارت داخلہ کے ایک سینئرافسرنے اس بات کی تصد یق کی کہ ریاست میں بحالیہ امن لوگوں کے جان و مال کے تحفظ کیلئے ضروری ہے کہ سر گرم عسکریت پسندوں کے خلا ف کارروائی جاری رہنی چاہئے تاہم بڑے پیمانے پرمشتر کہ آ پریشن شروع کرنے میں بھی کوئی حرج نہیں ہونا چاہئے ۔

تبصرے
Loading...