محض دو دنوں کی خاموشی کے بعد سرحدوں پر جنگ کا سماں بندھا

راجوری کے نوشیرا سیکٹر میں ہندوپاک افواج کے مابین شدید گولہ باری

0 52

سرینگر: ہندوستان اور پاکستانی افواج کے مابین دو دنوں کے وقفہ کے بعد ایک بار پر راجوری میں حد متارکہ پر شدید گولہ باری کا تبادلہ ہوا جس کے نتیجے میں سرحدی علاقہ دہل اُٹھا ۔ کرنٹ نیوز آف انڈیاکے مطابق دو دنوں تک ہندوستان اور پاکستانی سرحدوں پر خاموشی کے بعد آج ایک مرتبہ پھر گولہ باری ہوئی ۔ ذرائع کے مطابق سوموار کو راجوری ضلع میں کنٹرول لائن پر دونوں ممالک کی افواج نے ایک دوسرے کے فوجی ٹھکانوں پر نشانہ بناتے ہوئے جدید ترین ہتھیاروں کا استعمال کیا ۔ راجوری کے نوشیرا سیکٹر میں سوموار کو ہوئی شدید گولہ باری کے نتیجے میں سرحدی علاقہ دہل اُٹھا اور لوگ اپنے گھروں میں سہم کے رہ گئے ۔ اس دوران دفاعی ذرائع نے بتایا کہ سوموار کو راجوری کے نوشیرا سیکٹر میں پاکستان نے بلا اشتعال گولہ باری کرکے جنگ بندی معاہدے کی خلاف ورزی کی جس کے جواب میں بھارتی فوج نے بھی اپنے بندوقوں کے دہانے کھولے اور پاکستانی فوجی بینکروں کو نشانہ بنایا ۔ آر پار گولہ باری کے نتیجے میں کسی جانی نقصان کی کوئی اطلاع نہیں ملی ۔یاد رہے کہ 14فروری 2019کو لیتہ پورہ پلوامہ میں ہوئے فدائین حملے کے بعد جس میں سی آر پی ایف کے 49اہلکار ہلاک ہوئے تھے کے بعد ہندوستان اور پاکستان کے مابین شدید کشیدگی بڑھ گئی جبکہ سرحدوں پر بھی دونوں جانب شدید تنائو پایا جاتا ہے اور تب سے آج تک ہفتے کے ساتوں دن سرحدوں پر گولہ باری کاتبادلہ ہورہا ہے اور اب تک آر پار گولہ باری کے نتیجے میں درجنوں انسانی جانوں کا زیاں ہوا ہے ۔

تبصرے
Loading...