ماہ مقدس میں بھی وادی میں گراں فروشی عروج پر،بازاروں میں مختلف دکانوں پر ایک ہی اشاء مختلف قیمتوں پر دستیاب

0 57

سرینگر: ماہ رمضان کے اس مقدس ماہ میں بھی وادی میں گراں فروشی عروج پر ہے ایک ہی بازار میں الگ الگ دکاندار ایک ہی اشائے کی مختلف قیمتیں وصول کر رہے ہیں اور ہر طرف لوٹ کھسوٹ کا بازار گرم ہے ۔ کرنٹ نیوز آف انڈیا کے مطابق وادی کے مختلف اضلاع میں دکانداروں نے لوٹ و کھسوٹ کا بازار گرم کر رکھا ہے سبزیوں ، مرغ ، گوشت اور دیگر اشائے خوردونوش کی قیمتیں آسان کو چھو رہی ہے وادی کے مختلف اضلاع سے نمائندوں نے اطلاع دی ہے کہ یہاں پر ایک ہی بازار میں الگ الگ دکاندار ایک سی چیز کے لئے مختلف قیمتیں خراداروں سے وصول کر رہے ہیں قاضی گنڈ ، تلگام، یاری پورہ، ڈورو ویرناگ، مٹن اور دیگر بازاروں میں قائم سبزی فروش ، قصائی اور دیگر دکاندار لوگوں کو دو دو ہاتھوں سے لوٹ رہے ہیں اور متعلق محکمہ ناجائز منافع خوروں کی نکیل کسنے میں ناکام ہو گیا ہے نمائندے کے مطابق ایک دکاندار ٹماٹر کی قیمت 40روپئے وصول کر رہا ہے جبکہ دوسرا دکاندار 50روپئے ٹماٹر فروخت کر رہا ہے مٹر کی قیمت 50سے 70روپئے تک ہے پیاز ایک دکاندار کے پاس 35روپئے ہے جبکہ دوسرا دکاندار 40ایک 30روپئے فروخت کر رہا ہے اسی طرح فراش بین 40روپئے ، مولی 30سے چالیس روپئے ، گاجر 50روپئے اور ساگ 30روپئے فروخت کیا جارہا ہے جبکہ دوسرے دکاندار الگ ہی نرخ پر چیزیں بیچ رہے ہیں ۔ اس دوران بارہمولہ سے نمائندے نے اطلاع دی ہے کہ بڑے گوشت کی قمیت اگرچہ 180فی کلو ہے تاہم قصائی 230اور 240روپئے فروخت کر رہے ہیں اسی طرح بھیڑ کا گوشت 400اور کئی قصاب 450روپئے گوشت فروخت کر ہے ہیں ادھر سٹی رپورٹر نے بتایا کہ شہر سرینگر کے مختلف بازاروں میں اشائے خوردونوش کی الگ الگ قمیتیں ہیں ، اور متعلقہ محکمہ کے اہلکار عید الفطر کیلئے اپنے لئے جیب خرچ جمع کرنے میں لگے ہوئے ہیں کوئی کسی سے کچھ پوچھنے والا نہیں ہے سب دکاندار من مانی قیمتیں خریداروں سے وصول کر رہے ہیں ۔

تبصرے
Loading...