ماگام میں زہریلی چائے نوش کرنے سے پانچ افراد کی حالت متغیر

پانچوں افراد کو نازک حالت میں جے وی سی ہسپتال میں داخل کرایا گیا

0 15

سرینگر/11جون /سی این آئی زہریلی چائے پینے سے پانچ افراد کی حالت متغیر ہونے کے بعد انہیں نازک حالت میں ہسپتال میں داخل کیا گیا ہے ۔ پولیس نے اس حوالے سے معاملے کی تحقیقات شروع کی ہے ۔ کرنٹ نیوز آف انڈیا کے مطابق شمالی کشمیر کے بارہمولہ ضلع میں ایک ہی گھر کے تین افراد سمیت پانچ شہریوں کو زہریلی چائے پینے کے بعد اسپتال میں داخل کیا گیا۔یہ واقعہ ضلع کے کنزر علاقے میں گذشتہ اتوارکوپیش آیا جب ایک80سالہ خاتون نے اپنے شوہر بیٹے اور دو ہمسایوں کیلئے چائے تیار کرتے ہوئے کسی زہریلی شے کو چائے کی پتی سمجھ کر استعمال کیا۔اس واقعے پر علاقے میں تشویش کی لہر دوڑ گئی ہے اور مقامی لوگوںنے تمام افراد کو فوری طور پر ماگام ہسپتال میں داخل کرایا گیا جہاں سے انہیں جے وی سی بمنہ میں داخل کرایا گیا ہے جن کی شناخت عبد الغنی صوفی، اْن کی اہلیہ ساجہ، اْن کا بیٹا فاروق احمد صوفی، غلام قادر وازہ اور غلام محمد وانی ساکنان اتکو دھوبی ون کے بطور ہوئی ہے ۔ اس حوالے سے سٹیشن ہائوس آفیسر (ایس ایچ او) کنزر بشارت احمد کے مطابق خاتون سمیت جن پانچ افراد نے چائے استعمال کی تھی، اْنہیں ضلع کے ماگام اسپتال پہنچایا گیا جہاں سے اْنہیں جے وی سی بمنہ منتقل کیا گیا۔انہوں نے کہا کہ پولیس اس معاملے کی چھان بین کررہی ہے کہ چائے جیسی دکھنے والی چیز آخر کیا ہے ۔

تبصرے
Loading...