لائین آف کنٹرول پر دوسری بار جنگ بندی ماہدے کی خلاف ورزی سے صورتحال کشیدہ

پاکستان اور بھارتی افواج کے درمیان گولہ باری ، واقعہ میں کسی قسم کے نقصان کی کوئی اطلاع نہیں

0 30

سرینگر: امن کی کوششوں کے بیچ لائین آف کنٹرول پر گزشتہ دو ددنوں کے دوران دوسری بار تازہ گولہ باری کے نتیجے میں صورتحال کشیدہ ہو گئی اور پاکستان اور بھارتی افواج کے درمیان گولہ باری ہوئی تاہم اس واقعہ میں کسی قسم کے نقصان کی کوئی اطلاع نہیں ہے ۔کرنٹ نیوز آف انڈیا کو دفاعی ذرائع نے بتایا کہ سنیچروار اور اتوار کی درمیانی رات کو پاکستانی فوج نے اکھنور میں کنٹرول لائن پر پروگ وال سیکٹر میں کئی اگلی چوکیوں کو نشانہ بناتے ہوئے گولی باری کی ۔ذرائع کے مطابق سرحد پار سے خود کار ہتھیاروں سے شدیدفائرنگ کرنے کے علاوہ مارٹر گولے بھی داغے گئے جس کے جواب میں اِس پار سے بھی فائرنگ کی گئی۔گولی باری کا سلسلہ وقفے وقفے سے کافی دیر تک جاری رہا اور پھر تھم گیاتاہم ان واقعات میں کسی جانی یا مالی نقصان کی کوئی اطلاع نہیں ہے ۔البتہ فایرنگ کے نتیجے میںحد متارکہ کی کئی نزدیکی بستیوں میں خوف و ہراس پھیل گیا اور لوگ اپنے گھروں میں سہم کر رہ گئے ۔قابل ذکر ہے کہ کنٹرول لائن پر دراندازی مخالف اقدام کے بطور فوج کی طرف سے زیر زمین بارودی سرنگیں بچھائی جاتی ہیں جو بعض اوقات حادثوں کا سبب بھی بن جاتی ہیں اور ان کی زد میں فوجیوں کے ساتھ ساتھ عام شہری بھی آجاتے ہیں۔فوج کا کہنا ہے کہ پاکستانی فوج نے سیز فائر کی خلاف ورزی کرتے ہوئے اگلی چوکیوں کو نشانہ بنانے کی کوشش کی جس کا بھرپور جواب دیا گیا۔اس موقعہ پر فورسز نے فوری طور پر وسیع علاقہ کو محاصرے میں لیکر تلاشی کارروائی کا آغاز کیا۔ان واقعات کے بعد پونچھ کے ساتھ ساتھ دیگر سرحدی سیکٹروں میں تعینات سیکورٹی فورسز کو چوکس رہنے کے احکامات دئے گئے ہیں ۔دفاعی ذرائع کے مطابق خفیہ ایجنسیوں نے انکشاف کیا ہے کہ جموں کشمیر میں لائن آف کنٹرول پر پاکستانی فوج اور جنگجوئوں کی طرف سے غیر معمولی سرگرمیاں نظر آرہی ہیں اور پاکستانی زیر انتظام کشمیر میںجنگجوئوںکی ایک بڑی تعداد کو ریاست میں دھکیلنے کے لئے تیار حالت میں رکھا گیا ہے۔انٹیلی جنس ذرائع کاکہنا ہے کئی جگہوں پرپا کستانی فوج کو سرحد کے انتہائی نزدیک مشکوک حالت میں دیکھا گیا ہے جس سے طرح طرح کے خدشات نے جنم لیا ہے۔( سی این آئی )

تبصرے
Loading...