شوال کا چاند نظر آنے کی صورت میں کل عیدالفطر کی تقریب سعید منائی جارہی ہے

بارشوں کے باعث عید گاہ کے بجائے تاریخی جامع مسجد میں کی جائیگی نماز عید ادا

0 111

سرینگر: ماہ مبارک مکمل ہو نے کیساتھ ہی آج عید الفطر کی تقریب سعید انتہائی عقیدت و احترام اور دینی وملی جوش وجذبہ کے ساتھ منائی جارہی ہے ۔لاکھوں فرزندان تو حید عیدگاہوں، مسجدوں اور خانقاہوں میں صاف وپاک ملبوسات پہن کر نماز عید ادا کر یں گے۔اس سلسلے میں نماز عید کا سب سے بڑا اور تاریخی اجتماع سرینگر کے عید گاہ میںہونے والا تھا تاہم بارشوں کے نتیجے میں یہ فیصلہ لیا گیا کہ اب عید نماز تاریخی جامع مسجد میں ادا کی جائیگی ۔ جہاں حریت کانفرنس ع چیئر مین میر واعظ مولوی عمر فاروق لاکھوں لوگوں سے خطاب کریں گے۔ادھر درگاہ حضرتبل میں بھی نماز عید روایتی جوش و جذبہ اور دینی و ملی یکجہتی کیساتھ ادا کی جائیگی جہاں لاکھوں فرزندان توحید ماہ صیام مکمل ہونے کے بعد رب کائنات کے سامنے سربسجود ہونگے۔اسکے علاوہ وادی بھر کے تمام ضلعی ،تحصیل اور بلاک سطح پر بھی نماز عید کے سلسلے میں بڑے بڑے اجتماعات منعقد ہورہے ہیں جن میں لاکھوں فرزندان توحید شرکت کرینگے۔ادھر جموں شہر کے مسلم اکثریتی علاقوں کے علاوہ راجوری ، پونچھ ، ڈوڈہ ، بھدرواہ، کشتواڑ،بانہال اور دیگر علاقوں میں بھی نماز عیدکے بڑے بڑے اجتماعات ہورہے ہیں۔اس سلسلے میں عید گاہوں، مساجدوخانقاہوں کو پوری طرح صاف و شفاف رکھنے کے علاوہ خوب سجایا گیا ہے۔سی این آئی کے مطابق یاست جموں وکشمیر کے آرپار نمازعید کے روح پر ئور اور عظیم الشان اجتماعات کا انعقار ہو رہاہے ۔تاریخی عیدگاہ سرینگر میں نمار عید کا ایک بہت بڑا اجتماع منعقد ہونے والا تھا تاہم بارشوں کے باعث عید گاہ میں پانی جمع ہونے کے بعد یہ فیصلہ لیا گیا کہ عید کی نماز تاریخی جامع مسجد میں ادا کی جائیگی ۔ جس میں کم و بیش 2لاکھ فرزندان توحید کی شرکت کاامکان ہے ۔حریت کانفرنس(ع) کے چیئر مین میر واعظ مولوی عمر فاروق لاکھوں لوگوں سے خطاب کرینگے۔ ادھر آثار شریف درگاہ حضرت بل میں بھی نماز عید کا بہت بڑا اجتماع ہوگا جس میں لاکھوں فرزندان توحید شرکت کرینگے۔ اس سلسلے میں درگاہ حضرت بل کو سجایا اور سنوارا گیا ہے جہاں تقریباً1 لاکھ کے قریب لوگ نماز عید ادا کریںگے ۔ ادھر وادی کشمیر کے تمام ضلعی وتحصیل صدر مقامات کے علاوہ جموں شہر،ڈوڈہ ،ہندوارہ ،کشتواڑ ،بانہال ، رامبن،راجوری ، پونچھ ،اور کرگل میں بھی عظیم الشان اجتماعات کا انعقاد ہو گا جن میں لاکھوں فرزندان توحید شرکت کریں گے ۔نماز عید اجتماعات کے وقت رقت آمیزمناظر بھی دیکھے جائیں گے کیونکہ ہر عید گاہ ،مسجداور خانقاہ کے باہر ہزاروں کی تعداد میں معذور،بے سہارا ،یتیم بچے ،بیوہ خواتین بھیک مانگ رہے ہو نگے ۔کاش کہ ہم سب نے اپنی بساط کے مطابق وقت پر محتاجوں ومسکینوں کی امداد واعانت کی ہوتی تو شاید یہ سب لوگ بالخصوص یتیم بچے ہمارے شانہ بشانہ عید کی خوشیوں میں شامل ہو تے ۔

تبصرے
Loading...