ویڈیو:سوگن درگڑ میں مسلح تصادم آرائی ، حزب ائریا کمانڈر سجو ٹائیگر سمیت دو جنگجو اور نوجوان جاں بحق

جھڑپ کے بعد پلوامہ اور شوپیان کے کئی علاقوں میں جھڑپیں ، ٹیر گیس شلنگ ، انٹر نیٹ خدمات معطل

0 514

مڈورہ ترال میں فورسز اور جنگجو ئوں کے درمیان معرکہ آرائی جاری ، مظاہرین کو منتشر کرنے کیلئے ہوائی فائرنگ کا استعمال

 

 

سرینگر// شمالی قصبہ سوپور کے بعد جنوبی ضلع شوپیان کے درگڑ سوگن نامی علاقے میں ماہ رمضان کی 15ویں مسلح تصادم آرائی میں حزب ائریا کمانڈر سجو ٹائیگر سمیت دو مقامی جنگجو اور ایک نوجوان جاں بحق ہو گیا ۔ ادھر ترال کے مڈورہ علاقے میں فورسز اور جنگجوئوں کے درمیان ایک اور خونین معرکہ آرائی جاری ہے ۔ شوپیان اور نور پور ترا ل میں جھڑپوں کے ساتھ ہی فورسز اور مظاہرین کے درمیان جھڑپیں ہوئی جس دوران فورسز نے مظاہرین کو منتشر کرنے کیلئے لاٹھی چارج اور ٹیر گیس شلنگ کا استعمال کیا جبکہ مسلح تصادم آرائیوں کے ساتھ ہی شوپیان اور قصبہ اونتی پورہ میں موبائیل انٹر نیٹ خدمات معطل کی گئی ۔ پولیس نے شوپیان جھڑپ میں دو مقامی جنگجو او نوجوان کی ہلاکت کی تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ جھڑپ میں ہلاک ہوا نوجوان کل سے لاپتہ تھا ۔ ادھر جھڑپ میں دو مقامی جنگجو ئوں کے جاں بحق ہونے کی خبر پھیلتے ہی پلوامہ اورا س کے ملحقہ میں ہڑتال ہوئی جس کے ساتھ ہی تجارتی و کاروباری سرگرمیاں معطل رہی ۔ سی این آئی کے مطابق وادی کشمیر میں جنگجو ئوں کے خلاف آپریشن آل آوٹ میں تیزی کے بیچ جمعہ کو جنوبی ضلع شوپیان کے درگڑ سوگن اور اونتی پورہ کے نور پور ترال علاقے میں دو الگ الگ خونین معرکہ آرائیاں ہوئی ۔ دفاعی ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ سوگن درگڑنامی علاقے میں جنگجوئوں کی موجودگی کی اطلاع ملنے کے بعد فوج ، فورسز ، سی آر پی ایف اور ایس اوجی نے جمعہ کی اعلیٰ صبح علاقے میں تلاشی آپریشن شروع کیا ۔ ذرائع نے بتایا کہ علاقے میں اس وقت گولیوں کی گن گرج سنائی دی جب تلاشی کارورائی کے بعد نزدیکی باغات میں چھپے بیٹھے جنگجوئوں نے فرار ہونے کی کوشش میں اھندھا دھند فائرنگ کی جس کے ساتھ ہی فورسز نے بھی مورچہ زن ہوکر جوابی کارورائی کی اور طرفین کے مابین گولیوں کا تبادلہ شروع ہوا ۔ ذرائع نے بتایا کہ علاقے میں گولیوں کا تبادلہ شروع ہونے کے ساتھ ہی علاقہ لرز اٹھا جبکہ فورسز نے جنگجوئوں کے فرار ہونے کے تمام راستے سیل کر دئے اور اس طرح سے علاقے میں دو بدو جھڑپ شروع ہوئی ۔ذرائع کے مطابق جھڑپ کے ساتھ ہی فورسز کی مزید کمک علاقے کی طرف روانہ کی گئی جس دوران انہوں نے تمام علاقے کو سیل کرکے جنگجوئوں کے فرار ہونے کے تمامراستے بند کئے ۔ جبکہ ممکنہ احتجاجی مظاہروں کے پیش نظر علاقے میں فورسز کی بھاری تعداد تعینات کی گئی اور جھڑپ کے مقام کی طرف جانے والے تمام راستوں کو خار دار تاروں سے سیل کر دیا گیا ۔ ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ فورسز اور جنگجوئوں کے مابین جھڑپ کئی گھنٹوں تک جاری رہی جبکہ علاقے میں گولیوں کا تبادلہ تھم جانے کے ساتھ ہی جونہی فورسز نے علاقے میں تلاشی کارورائی عمل میں لائی تو جھڑپ کے مقام سے تین نعشیں برآمد ہوئی جن میں سے دو جنگجو اور ایک عام شہری تھا ۔ جنگجوئوں کی شناخت عابد منظور ماگرے عرف سجو ٹائیگر ولد منظور احمد ماگرے ساکنہ نو پورہ پلوامہ اور ہلال احمد بٹ ساکنہ آر مولہ لاسی پورہ کے بطور ہوئی ۔ دونوں جنگجو ئوں کا تعلق عسکری تنظیم حزب المجاہدین سے تھا ۔ جبکہ نوجوان کی شناخت جاسم رشید شاہ ساکنہ مل ناڈ زینہ پورہ کے بطور ہوئی ۔ جس کے بارے میں بتایا جاتا ہے کہ وہ کل سے گھر سے لاپتہ تھا ۔ جنگجوئوں کے قبضہ سے اسلحہ و گولی بارود بھی ضبط کیا گیا ۔معلوم ہوا ہے کہ ابھی علاقے میں خونین معرکہ آرائی جاری ہی تھی کہ نوجوانوں کی ٹولیوں نے سڑکوں پر نکل احتجاجی مظاہرے کئے جس دوران مظاہرین کو منتشر کرنے کیلئے فورسز نے طاقت کا استعمال کیا ۔ ادھر علاقے میں جھڑپ کے اختتام کے ساتھ ہی جمعہ کے بعد دوپہر ننرہ مڈورہ علاقے میں جنگجوئوں کی موجودگی کی اطلاع ملنے کے بعد فوج و فورسز اور سی آر پی اور ایس او جی اونتی پورہ نے علاقے کو محاصرے میں لیکر تلاشی کارروائی کی ۔ ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ جونہی علاقے میں فورسز نے تلاشی کارروائی شروع کی تو وہاں موجود جنگجوئوں نے فورسز پر فائرنگ کی جس کے ساتھ ہی طرفین کے مابین جھڑپ شروع ہوئی ۔بتایا جاتا ہے کہ طرفین کے مابین جھڑپ آخری اطلاعات ملنے تک جاری تھی ۔ شوپیان اور نور پور ترا ل میں جھڑپوں کے ساتھ ہی فورسز اور مظاہرین کے درمیان جھڑپیں ہوئی جس دوران فورسز نے مظاہرین کو منتشر کرنے کیلئے لاٹھی چارج اور ٹیر گیس شلنگ کا استعمال کیا جبکہ مسلح تصادم آرائیوں کے ساتھ ہی شوپیان اور قصبہ اونتی پورہ میں موبائیل انٹر نیٹ خدمات معطل کی گئی ۔ (سی این آئی )

تبصرے
Loading...