سرینگر سنٹرل جیل میں گذشتہ کئی روز سے بھوک ہڑتال پر،تحصیلدار خانیار کی یقین دہانی کے بعد قیدیوںنے بھوک ہڑتال ختم کی

0 31

سرینگر: سنٹرل جیل میں مقید اسیران نے تحصیلدار خانیار کی جانب سے دی گئی یقین دہانیوں کے بعد بھوک ہڑتال ختم کردی ۔ تاہم انہوںنے تحصیلدار موصوف کے سامنے اپنے کچھ مسائل و مطالبات رکھے ۔ کرنٹ نیوز آف انڈیاکے مطابق سرینگر سنٹرل جیل میں مقید اسیران گذشتہ چند روز سے بھوک ہڑتال پر تھے جبکہ ان کے رشتہ داروںکے کل سرینگر کی پریس کالونی میں زبردست احتجاج کیا تھا ۔ اس صورتحال کے پیش نظر ضلع ترقیاتی کمشنر سرینگر شاہد اقبال چودھری کی ہدایت پر تحصیلدار خانیار عبدلرحمان ڈار آج سرینگر سنٹرل جیل گئے جہاں انہوںنے قیدیوں کے ساتھ بات کی اور ان کو درپیش مشکلات کا ازالہ کرنے کیلئے ان انہیں یقین دلایا جس کے بعد قیدیوںنے بھوک ہڑتال ختم کردی ۔ اس حوالے سے ڈی سی سرینگر نے بتایا ہے کہ سرینگر سنٹرل جیل کے سپرانٹنڈنٹ کی درخواست پر قیدیوں کے ساتھ تحصیلدار کو جیل میں قیدیوں کے ساتھ بات کرنے کیلئے بھیج دیا گیا تھا ۔ اس دوران معلوم ہوا ہے کہ اسیران کے ساتھ مزید بات کرنے کیلئے جوڈیشری کی ایک ٹیم 19اپریل کے بعد جیل کا دورہ کرے گی جو وہاں پر قیدیوں کے مسائل کا جائزہ لے گی اور اس بات کا بھی جائزہ لیا جائے گا کہ جیل قواعد کے مطابق اسیران کو ہر سہولیات دسیتاب ہے کہ نہیں۔ یاد رہے کہ گذشتہ دنوں سرینگر سنٹرل جیل میں جیل حکام اور قیدیوںکے درمیان کسی معاملے پر تصادم آرائی ہوئی تھی جس میں کئی قیدیوں کو چوٹیں بھی آئی تھی جس کے بعد کئی قیدیوں کے خلاف کیس بھی درج کیا گیا تھا ۔ اس کے ساتھ گذشتہ روز اسیران کے رشتہ داروں نے سرینگر پریس کالونی میں احتجاج کرتے ہوئے کہا تھا کہ سرینگر سنٹرل جیل میں قیدی غیر محفوظ ہے اور اس جیل کو گونتا موبے جیل میں تبدیل کیا گیا ہے جہاں پر قیدیوںکے ساتھ نوروا سکوک کیا جارہا ہے ۔

تبصرے
Loading...