ریاست میں اسمبلی الیکشن کرانے کے ضمن میں صلاح مشورہ جاری

چناو کمیشن امر ناتھ یاترا کے بعد الیکشن کرانے پر راضی تاہم بی جے پی مارچ 2019تک الیکشن کو موخر کرنے پر بضد

0 85

سرینگر/21مئی / جے کے این ایس/ ریاست میں اسمبلی الیکشن کیلئے نئی دہلی میں صلاح مشورے جاری ہے۔ معلوم ہوا ہے کہ امر ناتھ یاترا کے فوری بعد ریاست میں اسمبلی الیکشن کرانے پر سبھی نے اپنی آرا ء پیش کی ہے۔ تاہم بی جے پی اگلے سال کے مارچ مہینے میں الیکشن کرانے پر بضد ہے۔ جے کے این ایس کے مطابق ریاست جموں وکشمیر میں اسمبلی الیکشن کرانے کے ضمن میں نئی دہلی میں چیف الیکشن کمیشن کی سربراہی میں میٹنگ منعقد ہوئی جس دوران اسمبلی الیکشن کرانے پر غور وغوض ہوا۔ ذرائع کے مطابق ریاست کے دورے پر آئے مبصرین نے الیکشن کمیشن کو رپورٹ سونپی ہے جس میں پارلیمانی انتخابات کے فوری بعد چناو کرنے کی بات کئی گئی ہے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ میٹنگ کے دوران اس رپورٹ پر سیر حاصل بحث کی گئی۔ معلوم ہوا ہے کہ الیکشن کمیشن آف انڈیا سالانہ امر ناتھ یاترا کے فوری بعد ریاست میں اسمبلی الیکشن کرانے کے حق میں ہے تاہم مرکزی وزارت داخلہ اور بی جے پی کی جانب سے اس پر سوالات اُٹھائے جارہے ہیں۔ ذرائع نے بتایا کہ بی جے پی مارچ 2019میں انتخابات کرانے پر بضد ہے اور اس سلسلے میں مرکزی وزارت داخلہ بھی چناو کمیشن کو الیکشن موخر کرانے پر زور دیا ہے۔ وزارت داخلہ نے موقف اختیار کیا کہ ریاست میں حالات سازگار نہیں لہذا انتخابات کو مارچ کے مہینے میں کرانا ہی بہتر ہوگا۔ ذرائع کے مطابق پارلیمانی انتخابات کے نتائج سامنے آنے کے بعد اگر بی جے پی مرکز میں حکومت بنانے میں کامیاب ہوگی تو الیکشن کو مارچ تک موخر کرانے کا قوی امکان ہے۔ اگر کسی دوسری پارٹی کو پارلیمانی انتخابات میں برتری حاصل ہوئی تو رواں برس کے دوران ہی الیکشن منعقد کرنے کیلئے راہ ہموار ہوسکتی ہے۔ اب یہ دیکھنا دلچسپ ہوگا کہ 23مئی کے روز مرکز میں کس پارٹی کو برتری ملتی ہے۔

تبصرے
Loading...