رضوان اسدپنڈت کی حراستی موت: وادی میں انٹرنیٹ کی رفتار پر پھر بریک، ریل سروس بھی عارضی طور بند

19

سرینگر : اونتی پورہ میں ایک اْستاد کی زیر حراست ہلاکت کے خلاف متحدہ مزاحمتی قیادت کی جانب سے دی گئی ہڑتالی کال کے پیش نظرانتظامیہ نے وادی میں انٹرنیٹ رفتار دھیمی کردی ہے جبکہ بانہال سے بارہمولہ تک چلنے والی ریل پر بھی بریک لگائی گئی ہے۔ کرنٹ نیوز آف انڈیا کے مطابق اونتی پورہ میں ایک اْستاد رضوان اسد نامی 28سالہ نوجوان کی پولیس سٹیشن میں موت کے خلاف مزاحمتی قیادت نے بدھ کے روز وادی میں مکمل ہڑتال کی کال دی تھی جس کے نتیجے میں آج وادی بھر میں معمولات زندگی درہم برہم ہوکے رہ گئیں۔ اس صورتحال کے پیش نظر صوبائی انتظامیہ نے آج وادی میں انٹرنیٹ سہولیات پر ایک بار پھر قدغن لگاتے ہوئے انٹرنیٹ کی رفتار کودھیمی کرکے 2Gرفتار پر چالو رکھا جس کے نتیجے میں لوگوں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑرہا ہے۔ جبکہ عام لوگوں کے علاوہ طلبہ ، کاروباری افراد کو بھی شدید دشواریوں کا سامنا کرنا پڑرہا ہے۔ لوگوں نے اس حوالے سے بتایا کہ وادی کشمیر میں انٹرنیٹ پر بار بار قدغن لگانے کی وجہ سے لوگوںکو مشکلات ہی پیش آرہی ہے جبکہ حالات اور انٹرنیٹ کا کوئی واسطہ نہیں ہے۔ انٹرنیٹ اب زندگی کا ایک حصہ بن چکا ہے اور اس پر بار بار قدغن لگانے سے لوگوں کی معمولات زندگی پر بھی اثرات مرتب ہورہے ہیں۔ ادھر وادی میں ہڑتال کے پیش نظر ریلوے حکام نے بھی بدھ کے روز بانہال بارہمولہ ریل سروس کو بند کرنے کا فیصلہ کیا۔ اس حوالے سے ریلوے حکام نے کہا ہے کہ آج بانہال ، قاضی گنڈ، سرینگر، بارہمولہ روٹوں پر ٹرین نہیں چلے گی اور یہ اقدام احتیاط کے طور پر اْٹھایا گیا ہے۔ تاکہ لوگوں اور ریل جائیداد کو کوئی نقصان نہ پہنچے۔

تبصرے
Loading...