جامعہ اردو علی گڑھ میں80واں یوم تاسیس منایا گیا

کشمیر سے تعلق رکھنے والی ہونہار طالبہ کو بہتر ین مضمون نگارکے اعزاز سے نوازا گیا

0 84

سرینگر: جامعہ اردو علی گڑھ کے 80واں یوم تاسیس کے موقعہ پر منعقد ہوئی ایک تقریب میں ادب، سماج اور شخصیت پر ایک خطبہ کا اہتمام کیا گیااور مقالہ نگاران و شرکاء میں سرٹیفکیٹ تقسیم کیے گئے ، جس میں شمالی کشمیر کے ضلع بارہمولہ سے تعلق رکھنے والے ہونہار طالبہ کو بہترین مضمون نگاری کیلئے اعزاز سے نوازا گیا۔سی این آئی کے مطابق جامعہ اردو علی گڑھ کے 80واں یوم تاسیس کے موقعہ پر ایک تقریب کا انعقاد ہوا۔ اس سلسلے میں جامعہ اردو کے ڈائریکٹر ڈاکٹر جسیم محمد نے بتایا کہ جامعہ اردو علی گڑھ صرف طلبا میں فروغ علم کا فریضہ ہی انجام نہیں دے رہا ہے بلکہ ان کی ہمہ جہت صلاحیتوں کو نکھارنے کا بھی کان کرتاہے انہوں نے کہا کہ جامعہ اردو علی گڑھ نے ادب،سماج اور شخصیت کے موضوع پر ایک خطبے کا اہتمام کیا تھا جس میں ریسرچ پیپر پیش کیے گئے جس کے مقالہ نگاران اور شرکاء میں سرٹیفکیٹ تقسیم کئے۔سابق ڈین پروفیسر شیخ مستان نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ جامعہ اردو علی گڑھ زبان و ادب کی مسلسل خدمت کر رہاہے، انہوں نے کہا کہ ادب نوجوانوں کی شخصیت کو نکھارتا ہے۔صدر شعبہ اردو علی گڑھ مسلم یونیورسٹی علی گڑھ پروفیسر طارق چھتاری نے کہا اردو صرف ایک زبان نہیں ہے بلکہ ایک تہذیب ہے اردو سمیت سبھی زبانوں کے ادب سماج کی صورت حال کا آئینہ ہوتے ہیں. انہوں نے نوجوانوں سے اپیل کی کہ وہ ادب میں دلچسپی کا مظاہرہ کریں تاکہ ان کی شخصیت نکھر کر سامنے آئے۔تقریب کے دوران مضمون نگاروں ، مقالہ نگاران و شرکاء میں سرٹیفکیٹ تقسیم کئے گئے ، جس میں شمالی کشمیر کے ضلع بارہمولہ سے تعلق رکھنے والی ایک ہونہار طالبہ بلقس مقبول بھی شامل ہے جنہیں نوجوان مضمون نگار کیلئے اعزاز سے نواز گیا۔ شمالی کشمیر کے ضلع بارہمولہ سے تعلق رکھنے والی بلقیس مقبول شعبہ اردو Aligarh Muslim University میں زیر تعلیم ہے اور موصوفہ نے اس سے قبل بھی کئی اہم مضوعات پر اردو میں مضامین تحریر کئے ہیں جس کیلئے ان کی کافی حوصلہ افزائی کی گئی ہے۔اس موقعہ پر حیدرآباد کی آر جے حرا آفتاب نے کہا کہ سماج کے مختلف طبقات کی متعدد مسائل ہوتے ہیں ادب ان مسائل کو نہ صرف اٹھاتا ہے بلکہ ان کا حل بھی تلاش کرتاہے۔انہوں نے کہا کہ ادب کے ذریعہ ہی سماج میں خواتین کی حالت تبدیل ہوئی ہے۔اے ایم یو اردو اکیڈمی کے ڈپٹی ڈائریکٹر ڈاکٹر زبیر شاداب نے کہا کہ اردو اساتذہ کو وقتا فوقتا ٹریننگ کے لیے بھیجنا چاہیے۔

تبصرے
Loading...