تیز آندھی اور ژالہ بھاری سے جنوبی قصبہ کے کئی علاقوں میں خوف و دہشت

بجلی نظام درہم برہم ،فصلوں اور میوہ باغات کو نقصان، کسان اور باغ مالکان خون کے آنسوں بہانے پر مجبور

0 121

سرینگر: موسمی صورتحال اور مسلسل بارشوںاور شدید ژالہ باری اور طوفانی ہوائیوں کی وجہ سے کھڑی فصلوں اور میوہ باغات کو بڑے پیمانے پر نقصان پہنچا کسان خون کے آنسوں رونے پر مجبورکیا ہے ۔ کھڑی فصلوں سیب ،اخروٹ ،بادام ،خوبانی ،چری کو تباہ وبرباد کرکے رکھ دیا ۔ ادھر ترال ،اونتی پورہ ،پلوامہ ،اننت ناگ اور شوپیان کے کئی علاقوں میں میں تیز ہوائیں چلنے سے لوگوں میں خوف و دہشت کی لہر پھیل گئی ۔کرنٹ نیوز آف انڈیا کے مطابق ودی کشمیر میں خراب موسمی صورتحال اور تازہ بارشیں اور کئی مقامات پر ژالہ باری کی وجہ سے شما ل و جنوب میںمیوہ جات مکمل طور پر تباہ و برباد ہو کر رہ گئے جبکہ سبزیوں کی کیاری ، سرسوں اور دوسری فصلیں مکمل طور پر تباہ وبرباد ہو کر رہ گئیں۔ کئی عمر رسیدہ افراد کے مطابق انہوںنے زندگی اس قدر کی موسمی صورتحال نہیں دیکھی ہے مقامی لوگوں کے مطابق ان علاقوں میں گزشتہ کئی دنوں میں مسلسل بارشیں ہوئی جس کی وجہ سے سیب اور کھڑی فصلوں کا اب نام و نشان تک باقی نہیں رہ گیا ہے۔ادھر پلوامہ ،شوپیان اور دوسرے کئی علاقوںمیں بھی منگل کی شام کو زبردست ژالہ باری ہوئی ،پلوامہ ،شوپیان کے کئی علاقوںمیں کھڑی فصلوں اور سیب کو بڑے پیمانے پر نقصان پہنچا ہے۔ وقفے وقفے سے بارشیں ہونے کے باعث باغ مالکان اور کسان خون کے آنسوں رونے پر مجبور ہو گئے ہیں اور ان کی سال بھر کی آمدنی کے ذرائع مکمل طو پر تباہ وبرباد ہو گئے ہیں۔ کئی سیاسی ، سماجی تنظیموں نے سرکار سے مطالبہ کیا ہے کہ جن علاقوںمیں شدید بارشیں اور ژالہ بھاری ہوئی ہے اور کھڑی فصلوں میوہ جات کو نقصان پہنچا ہے ان علاقوں کے متاثرین کی امداد کے سلسلے میں فوری اقدامات اٹھائے جائیں۔ ادھر نمائندے نے اونتی پورہ سے مزید تفصیلات فراہم کرتے ہوئے کہا کہ اونتی پورہ اور ترال کے درجنوں علاقوں میں کل شام اس وقت خوف و دہشت کی لہر پھیل گئی جب اچانک تیز آندھی اور بارشوں کا سلسلہ شروع ہوا ۔معلوم ہوا ہے کہ تیز اندھی کی وجہ سے کھڑی فصلوں کو شدید نقصان پہنچ گیا ہے جبکہ درجنوں علاقوں میں بجلی پول اور درخت اکھاڑ آئے جس کے نتیجے میں بجلی کا نظام مکمل طور پر ٹھپ ہو کر رہ گیا ۔

تبصرے
Loading...