بھدرواہ میں گائورکھشکوں نے ایک شہری کو مبینہ طور پر ہلاک کرڈالا

امن و قانون کی صورتحال کو برقراررکھنے کیلئے انتظامیہ نے کرفیو کا نفاذ عمل میں لایا

0 104

سرینگر/ صوبہ جموں کے قصبہ بھدرواہ میں جمعرات کو گائو رکھشکوں نے مبینہ طور پر ایک شہری کو ہلاک کرڈالا جس کے خلاف قصبہ میں شدید غم و غصے کی لہر دوڑ گئی اور لوگوں نے اس ہلاکت کے خلاف سڑکوں پر نکل کر احتجاجی مظاہرے کئے جس کے بعد انتظامیہ نے قصبہ میں امن و قانون کی صورتحال کو برقراررکھنے کیلئے سخت کرفیوکا نفاذ عمل میں لایا ہے ۔ کرنٹ نیوز آف انڈیا کے مطابق ریاست جموںوکشمیر کے صوبہ جموں کے بھدرواہ قصبے میں جمعرات کو اُس وقت حالات ابتر ہوگئے جب گائو رکھشکوں نے مبینہ طور پر ایک شہری کوگولی مارکر ہلاک کرڈالا۔ بتایا جاتا ہے کہ بھدرواہ میں جمعرات کو مبینہ طور گائو رکھشکوں کے ہاتھوں ایک درمیانہ درجے کے شہری کی ہلاکت کیخلاف شدید غم و غصہ پایا جارہا ہے جس کے پیش نظر انتظامیہ نے علاقے میں کرفیو نافذ کردیا۔اطلاعات کے مطابق تین افراد بھدرواہ کے محلہ قلعہ علاقے میں اپنے مویشیوں کو لیکر جارہے تھے جب اْن پر دوران شب مبینہ طور گائو رکھشکوں نے گولی چلائی۔یہ واقعہ نالتھی گائوں کے نزدیک پیش آیا۔اس حملے میں نعیم احمد شاہ جس کی عمر50سال بتائی جاتی ہے، موقع پر ہی جاں بحق ہوگیا جبکہ اس کے دو ساتھی بحفاظت فرار ہونے میں کامیابی ہوگئے۔اس واقعہ کے بعد بھدرواہ میں تنائو کی کیفیت پیدا ہوگئی جس کے پیش نظر انتظامیہ نے قصبہ میں کرفیو نافذ کردیا۔مقامی لوگ مجرموں کی فوری گرفتاری کا مطالبہ کررہے ہیں۔پولیس نے اس دوران دعویٰ کیا کہ انہوں نے سات مشتبہ افراد کی گرفتاری عمل میں لائی ہے تاہم مرکزی مشتبہ شخص ابھی تک فرار ہے۔قصبہ بھدرواہ میں ہوئی ہلاکت کے خلاف مقامی لوگوں میں سخت غم وغصے کی لہر دوڑ گئی ہے جبکہ وادی کشمیر میں بھی اس ہلاکت کی مذمت کی گئی ہے ادھر مزاحمتی قیادت کے علاوہ دیگر جماعتوںنے بھدرواہ میں ہوئی شہری ہلاکت پرسخت برہمی کااظہار کرتے ہوئے اس ہلاکت میں ملوث افراد کے خلاف سخت کارروائی کا مطالبہ کیا ہے ۔ ( سی این آئی )

تبصرے
Loading...