بھارتیہ جنتا پارٹی کے موقف میں کشمیر کے حوالے سے کوئی تبدیلی نہیں آئی / امیت شاہ

دہشت گردی کے ڈھانچوں کو ختم کرنے تک پاکستان کیساتھ کوئی بات چیت نہیں ہوگی

0 68

سرینگر: ریاست میں انتہاء پسندی کے خلاف سخت کارروائی کا عندیہ دیتے ہوئے بھارتیہ جنتا پارٹی کے قومی صدر امت شاہ نے کہا کہ پاکستان کے ساتھ تب تک کسی بھی معاملے پر بات نہیں کی جائے گی جب تک پاکستان اپنے ملک میں دہشت گردی کے ڈھانچوں کو ختم نہیں کرتا۔ سی این آئی مانیٹرنگ کے مطابق بھارتیہ جنتا پارٹی کے قومی صدر امت کمار شاہ نے ایک مقامی خبر رساں اداے کو اپنے انٹرویو میں کہا ہے کہ کانگریس نے ریاست میں انتہاء پسندی کو ہوا دی اور بی جے پی نے اس کے خلاف سخت کارروائی کی۔ پاکستان کے خلاف سرجیکل سٹرائک کی اور فضائی حملہ بھی کیا۔ انہوںنے کہا کہ وادی میںعلیحدگی پسندوں کے خلاف مزید سخت کارروائیاں کی جائیے گی۔ بھارتیہ جنتا پارٹی کے قومی صدر امت کمار شاہ نے کہا کہ بھارتیہ جنتا پارٹی کے موقف میںکشمیر کے حوالے سے کوئی تبدیلی نہیں آئی ہے۔ انہوں نے کانگریس پارٹی پر الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ اس پارٹی نے وادی میں علیٰحدگی پسندی کوبڑھاوادیا جس کے نتیجے میں وادی کشمیر میںملٹنسی اْبھری تاہم بھارتیہ جنتا پارٹی نے ملٹنسی کے خلاف سخت اقدامات اْٹھائے ہیں اور آئیندہ بھی انتہاپسندوں سے سختی کے ساتھ پیش آیا جائے گا۔ انہوںنے کہا کہ پاکستان کے ساتھ تب تک کسی بھی معاملے پر بات نہیں کی جائے گی جب تک پاکستان اپنے ملک میں دہشت گردی کے ڈھانچوں کو ختم نہیں کرتا۔ انہوںنے کہا کہ کشمیر میں جو اس وقت مار دھاڑ جاری ہے وہ پاکستان کی دین ہے۔ انہوں نے پاکستان پر الزا عائد کرتے ہوئے کہا کہ پاکستانی کی ایجنسیاں نہیں چاہتی کہ کشمیر کے حالات بہتر ہوں۔امت شاہ نے کہا کہ پاکستان کے ساتھ کئی بار دہشت گردی کا معاملہ اْٹھایا گیالیکن آج تک اس نے دہشت گردی کو ختم کرنے کیلئے کوئی ٹھوس اقدام نہیں اْٹھایا۔ انہوںنے کہا کہ بھارتیہ جنتا پارٹی پاکستان کے ساتھ بات چیت کے خلاف نہیں ہے تاہم آج تک جو بھی پاکستان نے کیا وہ ہمارے لئے دردناک ہے۔ امت شاہ نے بتایا کہ بی جے پی ملک کی ترقی اور بے روزگاری کیلئے برسر اقتدار آئی ہے اور ملک کے پڑھے لکھے نوجوانوں کو بہتر رو ز گار فراہم کرنا پارٹی کا لکھش ہے۔

تبصرے
Loading...