بالی ووڈ چھوڑنے کے بعد زائرہ وسیم کا ایک اوراہم فیصلہ،ان کی آخری فلم کی تشہیری مہم میں شرکت سے بھی کیا انکار

0 45

سرینگر : کم عمری میں بالی ووڈ میں جگہ بنانے میں کامیاب ہونے والی کشمیری دوشیزہ ذائرہ وسیم نے اپنی آخری فلم کیلئے تشہیری مہم چلانے سے بھی انکار کیا ہے ۔ دین اسلام سے شگف کے نتیجے میں ذائرہ نے فلم نگری کو خیر باد کہنے کا فیصلہ لیا ہے ۔ ذائرہ وسیم نے کم عمری میں ہی بالی ووڈ میں اپنی جگہ بناکر اچھا خاصہ نام کمایا تاہم اسلام کے ساتھ والہانہ عقیدت اور شگف کے نتیجے میں کشمیر کی بیٹی نے یہ فیصلہ لیا کہ وہ بالی ووڈ کی چکاچوند سے اب دور رہے گی۔ کرنٹ نیوز آف انڈیا کے مطابق مذہب کی خاطربالی ووڈ کو خیرباد کہنے والی اداکارہ زائرہ وسیم نے اپنی آخری فلم سے متعلق اہم فیصلہ کیا ہے۔دو ورزقبل دنگل اسٹار 18 سالہ زائرہ وسیم نے بالی ووڈ چھوڑنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا تھا کہ اس فیلڈ میں کام کرنے کی وجہ سے ان کا ایمان خطرے میں پڑرہا ہے اور وہ بہت خاموشی سے اپنے مذہب سے دور ہوتی جارہی ہیں لہٰذا وہ بالی ووڈ چھوڑرہی ہیں۔زائرہ کے اس فیصلے پر لوگوں کا ملا جلا ردعمل سامنے آرہا ہے تاہم زائرہ نے اس بات کی تصدیق کی ہے کہ وہ اپنے فیصلے پر قائم ہیں۔ زائرہ بالی ووڈ میں اب تک صرف دو فلموں ’’دنگل‘‘ اور ’’سیکرٹ سپراسٹار‘‘ میں نظر آئی ہیں اور ان کی تیسری فلم ’’دی اسکائی ازپنک‘‘ اکتوبر میں نمائش کے لیے پیش کی جائے گی جس میں وہ اداکارہ پریانکا چوپڑا اورفرحان اختر کے ساتھ نظر آئیں گی۔زائرہ کے شوبز کو خیرباد کہنے کے بعد ’’دی اسکائی از پنک‘‘ ان کی بالی ووڈ میں آخری فلم ہوگی تاہم انہوں نے اپنی آخری فلم کی تشہیری مہم میں حصہ لینے سے انکارکردیا ہے۔ذرائع کے مطابق زائرہ نے فلم میکرز سے درخواست کی ہے کہ وہ انہیں فلم کی تشہیری سرگرمیوں سے باہررکھیں جو اگست کے آخر میں شروع ہورہی ہیں۔ واضح رہے کہ فلم میں زائرہ وسیم پریانکا چوپڑا اورفرحان اخترکی بیٹی کا کردار ادا کررہی ہیں۔یاد رہے کہ ذائرہ وسیم نے کم عمری میں ہی بالی ووڈ میں اپنی جگہ بناکر اچھا خاصہ نام کمایا تاہم اسلام کے ساتھ والہانہ عقیدت اور شگف کے نتیجے میں کشمیر کی بیٹی نے یہ فیصلہ لیا کہ وہ بالی ووڈ کی چکاچوند سے اب دور رہے گی۔ ( سی این آئی )

تبصرے
Loading...