ایس سی او کے مکمل اجلاس سیوزیراعظم نریندرمودی کا خطاب

انتہاء پسندی سے مقابلے کے لئے سب کا متحد ہونا ضروری/نریندرمودی

0 22

سرینگر/14جون/سی این آئی/ ایس سی او کے اجلاس میں خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم نریندر مودی نے پاکستان کو سخت پیغام دیتے ہوئے کہا کہ وقت رہنے اگر انتہاء پسندوں کو حمایت کرنا بند نہیں کیا گیا تو اس کے سخت نتائج برآمد ہوں گے ۔ انہوںنے کہا کہ افغانستان میں قیام امن اور تعمیر و ترقی کیلئے بھارت ہر ممکن تعاون کرنے کیلئے تیار ہے ۔ کرنٹ نیوز آف انڈیا مانیٹرنگ کے مطابق وزیراعظم نریندرمودی نے کرغزستان کے دارالحکومت بشکیک میں منعقد شنگھائی تعاون تنظیم یعنی ایس سی او کے مکمل اجلاس سے خطاب کیا۔ انہوں نے کہا’’ دہشت گردی ‘‘سے مقابلے کے لئے متحد ہونا ضروری ہے۔ انہوں نے کہا کہ دہشت گردی پر عالمی کانفرنس ہونی چاہیے۔دہشت گردی سے نمٹنے کے لیے ایس سی او ممالک کا تعاون ضروری بھی ضروری ہے۔اس کے علاوہ پی ایم مودی نے ایس سی او ممالک کے درمیان تعلقات مضبوط کرنے پر زور دیا۔وزیر اعظم نے اپنے خطاب کے دوران پاکستان کو سخت پیغام دیتے ہوئے کہا کہ جو ممالک دہشت گردی کی حمایت کرتے ہیں اور دہشت گردوں کو ہر طرح کا تعاون پیش کررہے ہیںوقت رہتے اگر انتہاء پسندوں کی حمایت بند نہیں کی گئی تو اس کے بھیانک نتائج سامنے آسکتے ہیں ۔ سی این آئی کے مطابق دو روزہ چوٹی کانفرنس کے دوران جمعہ کو آخری دن وزیراعظم نریندر مودی اور رکن ممالک کے لیڈروں کی میٹنگ شروع ہوگئی ہے۔ وزارت خارجہ کے ترجمان رویش کمار نے ٹوئٹ کرکے یہ اطلاع دی۔ رویش کمار نے بتایا کہ ’’اس دوران پی ایم مودی روس کے صدر ولادیمیر پوتن، چینی صدر شی جنپنگ سمیت ایس سی او کے لیڈروں کے ساتھ فوٹو سیشن میں شامل ہوئے۔‘‘کمار نے کہا کہ ’’کرغزستان کے صدر اور ایس سی او چوٹی کانفرنس 2019 کے موجودہ صدر سورون با جنبیکوف نے جمعہ کی صبح ایس سی او چوٹی کانفرنس میں شامل ہونے کے لئے پریسیڈینشیل پیلیس پہنچنے پر نریندرمودی کا گرم جوشی کے ساتھ خیرمقدم کیا۔‘‘وزیراعظم نریندرمودی نے جمعرات کو یہاں پہنچنے کے بعد پوتن، جنپنگ اورافغانستان کے صدر اشرف غنی کے ساتھ دوطرفہ بات چیت کی اور امن عمل میں ہندوستان کے ذریعہ ادا کئے گئے کردار پر بھی بات چیت ہوئی۔(سی این آئی )

تبصرے
Loading...