اْوڑی گیس سلنڈر دھماکہ: چھ سالہ بچہ دم توڑ بیٹھا،مرنے والوں کی تعداد 5

معصوم بچے کی موت کی خبر علاقے میں پہنچتے ہی وہاں ایک بار پھر صف ماتم بچھ گئی

0 20

سرینگر// چھہ سالہ بچہ ،جو شمالی کشمیر کے اْوڑی علاقے میں گیس سلنڈر دھماکے میں زخمی ہوا تھا، سنیچر کو آل انڈیا انسٹی چیوٹ آف میڈیکل سائنسز (ایمز)، دلی میں زخموں کی تاب نہ لاکر دم توڑ بیٹھا۔اس طرح اس درد ناک حادثے میں ایک ہی کنبہ کے مرنے والوں کی تعداد 5پہنچ گئی ہے ۔ کرنٹ نیوز آف انڈیا کے مطابق ضلع بارہمولہ کے اوڑی قصبہ میں 27مئی کو 35سالہ پروین اختر اور اس کی بیٹی 14سالہ شائستہ بانو اُس وقت زخمی ہوگئیں تھیںجب محمد شفیع چالکو ولد عبداللہ چالکوساکنہ لاگہامہ اوڑی کے رہائشی مکان میں ایک رسوئی گیس زور دار دھماکے ساتھ پھٹ گیا جس میں کنبہ کے سات ممبران بُری طر ح سے جھلس کر زخمی ہوگئے تھے جن کو فوری طور نزدیکی ہسپتال پہنچایا گیا جہاں سے ماہ بیٹی کو نازک حالت میں سرینگر کے سکمز ہسپتال میں داخل کیا گیا تھا جہاں پانچ روز تک ماں بیٹی زیر علاج رہنے کے بعد اتوار کے روز زخموں کی تاب نہ لاکر زندگی کی جنگ ہار گئیں۔زخمیوں میں سے مزید دو آج لقمہ اجل بن گئیں ۔ معلوم ہوا ہے کہ شیر کشمیر میڈیکل انسٹی چیوٹ، صورہ میں سوموار کو وہ دو بچیاں جاں بحق ہوگئیں جو شمالی کشمیر کے اْوڑی میں گیس سلینڈر کے دھماکے میں زخمی ہوئی تھیں۔مذکورہ دو بہنوں کی شناخت 16سالہ سبینہ بانو اور14سالہ شائستہ بانو دختران محمد شفیع ساکنہ چالکو اْوڑی کے طور کی گئی ہے۔ جبکہ آج پروینہ کا بیٹا عبید بھی داعی اجل کو لبیک کہہ گیا۔واضح رہے کہ اْوڑی میں 27مئی کو ایک گیس سلینڈر پھٹنے سے ایک ہی گھر کے سات افراد زخمی ہوئے تھے۔اب تک اس دھماکے میں بچیوں کی ماں سمیت 5 افراد جاں بحق ہوئے ہیں۔ادھر ایک ہی کنبہ کے پانچ افراد کے لقمہ اجل بن جانے کی وجہ سے علاقہ میں صف ماتم بچھ گئی اور ہر سو غم و اندوہ کی لہر دوڑ گئی ہے ۔ ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ مذکورہ کنبہ کے علاقے میں قیامت صغراء بپا ہوچکی ہے اور لوگ جوق در جوق غم زدہ خاندان کی ڈھارس بندھانے کیلئے جارے ہیں ۔ ( سی این آئی )

تبصرے
Loading...