اننت ناگ شوٹ آوٹ ، زخمی ایس ایچ او ارشد خان زخموں کی تاب نہ لاکر دم توڑ بیٹھا

ہلاکتوں کی تعداد سات تک پہنچ گئی ،مہلوکین میں ایس ایچ او کے علاوہ پانچ سی آر پی ایف اہلکار ایک جنگجو بھی شامل

0 38

سرینگر: جنوبی ضلع اننت ناگ میں گزشتہ دنوں فورسز اور جنگجوئوں کے مابین مختصر شوٹ آوٹ میں زخمی ہونے والے ایس ایچ او پولیس اسٹیشن صدر اننت ناگ موت و حیات کی کشمکش میں مبتلا رہنے کے بعد زندگی کی جنگ ہار گیا ۔ ایس ایچ او کی ہلاکت کے ساتھ ہی حملے میں مرنے والوں کی تعداد سات تک پہنچ گئی ہے جن میں ایک جنگجو ، پانچ سی آر پی ایف اہلکار اور ایس ایچ او پولیس اسٹیشن صدر اننت ناگ بھی شامل ہے ۔ سی این آئی کے مطابق 12جون کو کے پی روڑ اننت ناگ پر فورسز اور جنگجوئوں مانین مختصر شوٹ آوٹ میں سی آر پی ایف کے پانچ اہلکار ہلاک ہو گئے تھے جبکہ جوابی کارورائی میں ایک غیر ملکی جنگجو بھی ہلاک ہو گیا ۔ فائرنگ کے تبادلے میں ایس ایچ او صدر ارشد خان سمیت کئی فورسز اہلکار زخمی ہو گئے تھے جن کو علاج و معالجہ کیلئے فوجی اسپتال سرینگر منتقل کیا گیا جہاں سے ایس ایچ او صدر ارشد خان کو سکمز صورہ منتقل کیا گیا تھا جہاں اس کی حالت نازک بنی ہوئی تھی ، ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ اتوار کے روز ارشد خان کی حالت تشویش ناک ہونے کے بعد انہیں سرینگر کے سکمز صورہ سے ہوائی خدمات کے ذریعے آل انڈیا میڈیکل انسٹی چیوٹ نئی دہلی منتقل کرنے کی کوشش کی گئی تاہم وہ راستے میں ہی دم توڑ بیٹھا ۔ ایس ایچ او صدر اننت ناگ ارشد خان کی ہلاکت کے ساتھ ہی شوٹ آوٹ میں مرنے والوں کی تعداد سات تک پہنچ گئی جن میںسے پانچ سی آر پی ایف اہلکار ، ایک جنگجو اور ایس ایچ او ارشد خان شامل ہے ۔ پولیس کے ایک سنیئر افسر نے ارشد خان کی ہلاکت کی تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ ایس ایچ او صدر ارشد خان کی صورہ میڈیکل انسٹی چیوٹ میں حالت نازک ہونے کے بعد انہیں ہوئی خدمات کے ذریعے آل انڈیا میڈیکل انسٹی چیو ٹ نئی دہلی منتقل کیا گیا جہاں وہ زخموں کی تاب نہ لاکر دم توڑ بیٹھا ۔ ( سی این آئی )

تبصرے
Loading...