اننت ناگ :سکولی بچوں سے نجی گاڑی دھلوانے کا معاملہ

سرکاری سکول میں تعینات ٹیچر اور کلاس فورتھ ملازم کو اٹیچ کیا گای

0 51

سرینگر: سرکاری سکول میں تعینات ٹیچر اور ایک ملازم کو طلبہ سے اپنی نجی گاڑی دھلوانے کی پاداش میں منسلک کیا گیا ہے ۔ مذکورہ سرکاری ملازمین پر الزام ہے کہ وہ سکول میں زیر تعلیم طلبہ کو اپنے ذاتی کاموں کیلئے استعمال کررہے ہیں ۔ کرنٹ نیو زآف انڈیا کے مطابق سرکاری سکولوں میں زیر تعلیم طلبہ کو سکول سٹاف اپنے ذاتی کاموں کیلئے استعمال کررہے ہیں تازہ واقعہ میں جنوبی کشمیر کے ضلع اننت ناگ میں چیف ایجوکیشن آفیسر نے ٹیچر محمد اقبال خان اور ایک کلاس فورتھ ملازم شبیر احمد لون کو اٹیک کیا ہے ۔ سوشل میڈیا پر ایک ویڈیو وائرل ہوا تھا جس میں سرکاری سکول میں زیر تعلیم سکولی بچوں سے مذکورہ ملازمین اپنی گاڑیاں دھلوارہے تھے ۔ ویڈیو وائرل ہونے کے بعد سی ای او اننت ناگ عبدالروف شاہ نے دونوں کو منسلک کیا ہے ۔ سی ای اونے اس بات کی تصدیق کرتے ہوئے کہااس معاملے کی جانچ کی جارہی ہے اور تب تک دونوں کو منسلک کیاگیا ہے اور رپورٹ آنے کے بعد اگر اس بات میں سچائی ہوئی تو ان کے خلاف ضابطے کے تحت کارروائی کی جائے گی۔ واضح رہے کہ اس سے پہلے بھی کئی معاملات ایسے سامنے آئے ہیں جن میں سرکاری سکولوں میں زیر تعلیم بچوں سے کام کروایا دیکھا گیا ہے ۔ کوئی ٹیچر طلبہ سے اپنی ٹانگیوں دباتا ہے تو کسی سکول میں بچوں سے گیس سیلنڈر ، بالن و غیرہ لانے کیلئے کہا جاتا ہے ۔ تاہم اس طرح سرکاری سکولوں میں زیر تعلیم بچوں کا استحصال کرنے والے اساتذہ اور سٹاف کے خلاف ابھی تک کارروائی کرنے کا کوئی بھی معاملہ پیش نہیں آیا ہے ۔

تبصرے
Loading...